نئی وڈیو: چینی مسافر طیارہ بجلی کی سی رفتار سے عمودا گرا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

چین نے آج منگل کے روز تصدیق کر دی ہے کہ گذشتہ روز ملک کے جنوبی حصے میں گر کر تباہ ہونے والے مسافر طیارے میں سوار تمام 132 افراد ہلاک ہو گئے۔ حادثے کا شکار ہونے والا 737 بوئنگ طیارہ چینی فضائی کمپنی 'ایسٹرن ایئرلائنز' کا تھا۔ یہ طیارہ پیر کے روز دوران پرواز 8 ہزار میٹر سے زیادہ بلندی سے اچانک زمین پر آ گرا۔

چین اور دنیا بھر میں ہوابازی سے متعلق ایسوسی ایشن NVS نے 15 سیکنڈ کا ایک وڈیو کلپ جاری کیا ہے۔ اس میں طیارے کو راکٹ کی شکل میں زمین کی جانب گرتے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے۔ یہ تقریبا 12 برسوں کے دوران میں چین میں بد ترین فضائی حادثہ شمار کیا جا رہا ہے۔

ادھرFlight Radar 2) ) کی جانب سے یہ معلومات فراہم کی گئی ہیں کہ مذکورہ طیارہ صرف سوا دو منٹ کے اندر 8840 میٹر سے 900 میٹرکی بلندی تک آن گرا۔ عمودی صورت میں نیچے آتے ہوئے طیارے کی رفتار 840 کلو میٹر فی گھنٹہ سے زیادہ تھی۔

طیارہ ڈیڑھ منٹ کے اندر گر کر تباہ ہو گیا۔

ایسٹرن ایئرلائنز کے طیارے نے پیر کی دوپہر چین کے جنوب مغربی شہر کونمنگ سے اڑان بھری تھی۔ طیارے کو تقریبا 1300 کلو میٹر کا فاصلہ طے کر کے کینٹن جانا تھا۔ طیارے میں 123 مسافر اور عملے کے 9 ارکان سوار تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں