روس اور یوکرین

امریکا میں درجنوں روسی ارکان پارلیمان اور حساس ملٹری کمپنیاں بلیک لسٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

جمعرات کو امریکی وزارت خزانہ نے روس پر نئی اقتصادی پابندیاں عائد کرنے کا اعلان کیا جن میں درجنوں روسی دفاعی کمپنیوں، روسی پارلیمنٹ کے 328 ارکان ، روس کے سب سے بڑے مالیاتی ادارے سبیر بنک کے سربراہ ہرمن گریف اور پوتن کے قریبی ساتھی شامل ہیں۔ .

’یو ایس ٹریژری‘ نے ایک بیان میں کہا کہ یہ اقدام یورپی یونین، برطانیہ اور کینیڈا کی طرف سے کیے گئے اسی طرح کے اقدامات سے مطابقت رکھتا اور پوتین کو اپنی پسند کی جنگ کے لیے جوابدہ ٹھہرانے کے لیے مسلسل اتحاد کی عکاسی کرتا ہے۔

پابندیوں میں کئی کمپنیاں شامل ہیں جو روس کے دفاعی صنعتی اڈے کا حصہ ہیں اور ہتھیار تیار کرتی ہیں۔ یوکرین کے عوام، انفراسٹرکچر اور سرزمین کے خلاف روس کے حملے میں استعمال ہوتے ہیں۔

امریکی وزارت خزانہ کا کہنا ہے کہ مغربی تکنیکی اور مالیاتی وسائل سے 48 کمپنیوں کو منقطع کرنے سے روسی دفاعی صنعت کی بنیاد اور سپلائی چین پر گہرا اور طویل مدتی اثر پڑے گا۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ روسی ڈوما کے ارکان نے یوکرین کی خودمختاری اور علاقائی سالمیت کی خلاف ورزی کرنے کے لیے کریملن کی کوششوں کی حمایت کی ہے۔ ڈونا کونسل نے مشرقی یوکرین کے ان علاقوں کی آزادی کو تسلیم کرنے والے معاہدوں کے ذریعے حکومت کی معاونت کی جو روس کی پراکسیوں کے زیر کنٹرول ہیں۔ ان میں ڈونیٹسک پیپلز ریپبلک اور لوہانسک پیپلز ریپبلک کا نام دیا جاتا ہے۔

ڈوما کے 328 ارکان کو نامزد کرنے کے علاوہ، محکمہ خزانہ میں غیر ملکی اثاثوں کے کنٹرول کے دفتر نے ڈوما کو بھی پابندیوں کی فہرست میں شامل کیا۔

امریکی وزیر خزانہ جینٹ ییلن نے کہا کہ روسی ڈوما کونسل پوتین کے حملے کی حمایت جاری رکھے ہوئے ہے۔ معلومات کے آزادانہ بہاؤ کو روک رہی ہے اور روس شہریوں کے بنیادی حقوق کی خلاف ورزی کر رہا ہے۔

سیاسی اور اقتصادی شخصیات

قبل ازیں امریکی قومی سلامتی کے مشیر جیک سلیوان جو صدر جو بائیڈن کے ساتھ یورپ کے دورے پر ہیں نے بدھ کے روز کہا کہ امریکا جمعرات کو سیاسی اور اقتصادی شخصیات سمیت، پابندیوں کے ایک نئے پیکج کا اعلان کرے گا۔

سلیوان نے ایئر فورس ون میں سوار صحافیوں کو بتایا کہ جی 7 ممالک اس بات کو یقینی بنانے کے لیے ایک "اینی شی ایٹیو " شروع کریں گے کہ ماسکو ان پابندیوں کی خلاف ورزی نہ کرے جو اس سے پہلے 24 فروری کو یوکرین پر حملے کے بعد اس پر عائد کی گئی تھیں۔

منگل کو ایک سینیر امریکی عہدیدار نے کہا تھا کہ امریکی صدر جو بائیڈن جمعرات کو روس کے خلاف نئی پابندیوں کا اعلان کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔ اس وقت وہ نیٹو کے رہ نماؤں اور یورپی اتحادیوں کے ساتھ ملاقاتوں کے لیے روانہ ہونے کی تیاری کررہے تھے۔

امریکی میڈیا کےمطابق واشنگٹن روسی ڈوما (پارلیمنٹ) کے اکثریتی ارکان کے خلاف پابندیاں لگانے کی تیاری کر رہا ہے۔ بائیڈن کونسل کے 300 سے زائد ارکان کے خلاف پابندیوں کا اعلان کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں