روس اور یوکرین

زیلنسکی کا روس پر "فاسفورس بم" استعمال کرنے کا الزام، نیٹو سے فوجی امداد کی درخواست

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

جمعرات کو یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی نے ایک بار پھر نارتھ اٹلانٹک ٹریٹی آرگنائزیشن (نیٹو) سے لامحدود فوجی امداد کے لیے کہا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ روسی فوج کا مقابلہ کرنے کے انہیں نیٹو کی طرف سےفوجی مدد کی ضرورت ہے۔ اس وقت یوکرین غیر مساوی حالات میں روس کو پسپا کر رہا ہے۔ انہوں نے ماسکو پر "فاسفورس بم" استعمال کرنے کا الزام لگایا۔

انہوں نے کہا کہ لوگوں اور اپنے شہروں کو بچانے کے لیے یوکرین کو بغیر کسی پابندی کے فوجی مدد کی ضرورت ہے۔ جس طرح روس، بغیر کسی پابندی کے، اپنے تمام ہتھیار استعمال کرتا ہے۔ زیلنسکی نے "ٹیلی گرام" پر اپنے اکاؤنٹ پر پوسٹ کیے گئے ایک ویڈیو کلپ میں یہ بیان ایک ایسے وقت میں دیا ہےجب نیٹو کے رکن ممالک کے رہ نما برسلز میں ایک غیر معمولی سربراہی اجلاس میں ملاقات کر رہے ہیں۔

انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ یوکرین یورپی یونین کا رکن بننے کا حقدار ہے۔ انہوں نے خبردار کیا کہ روس کا اگلا ہدف پولینڈ جیسے مشرقی یورپ میں نیٹو کے رکن ہوں گے۔ انہوں نے نیٹو کے سربراہ اجلاس سے خطاب سے پہلے ایک ویڈیو خطاب میں کہا کہ روس مزید آگے بڑھنا چاہتا ہے۔ نیٹو کے مشرقی ارکان، بالٹک ریاستوں کے خلاف اور اس کے بعد یقیناً پولینڈ کے خلاف کارروائی کرسکتا ہے۔

یوکرینی صدر نے اپنے ملک میں روسی فوجی آپریشن کے آغاز کے ایک ماہ بعد روس پر یوکرین میں "فاسفورس بم" استعمال کرنے کا الزام لگایا۔ انہوں نے کہا کہ آج صبح فاسفورس بم برسائے گئے جن میں کئی جوان اور بچے مارے گئے۔

بدھ کو یوکرینی صدر نے اپنے ملک میں روسی فوجی آپریشن کے خلاف دنیا بھر میں مظاہروں کی کال دی تھی۔

ایک ویڈیو ریکارڈنگ میں جس میں انہوں نے انگریزی میں بات کی مطالبہ کیا کہ دنیا بھرمیں یوکرین کی حمایت اور روسی جارحیت کے خلاف احتجاج کیا جائے۔

یوکرین کے صدر نے مزید کہا کہ برسلز میں آئندہ تین سربراہی اجلاسوں کے دوران یوکرین کی پوزیشن مضبوط ہو گی۔ انہوں نے شہریوں کے تحفظ کے لیے اتحاد کی ضرورت پر زور دیا۔

یہ بیان اس وقت سامنے آیا ہے جب امریکی وزیر خارجہ انٹنی بلنکن نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں یوکرین میں انسانی صورت حال سے متعلق روسی قرارداد کی ناکامی کو ماسکو کی باقی دنیا میں تنہائی قرار دیا۔

بلنکن نے کہا یہ یوکرین کے لوگوں پر ڈھائے جانے والے خوفناک تشدد سے توجہ ہٹانے کے لیے ماسکو کی "مایوسی" کی نشاندہی کرتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں