یوکرین میں تنازع ختم کرنے کے لیے مل کرکام کیا جانا چاہیے: سعودی وزیر خارجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی وزیر خارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان نے مطالبہ کیا ہے کہ یوکرین میں جاری تنازع ختم کرنے پر کام کیا جائے۔ ان کا کہنا ہے کہ "یوکرین میں جاری حالیہ تنازع کے خاتمے کے لیے بات چیت بنیادی چیز ہے"۔

آج بروز ہفتہ دوحہ فورم سے خطاب میں شہزادہ فیصل نے زور دیا کہ جنوب کے ترقی پذیر ممالک کو درپیش مشکلات پر خصوصی توجہ دی جائے۔ انھوں نے باور کرایا کہ ان چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کے لیے دنیا کو مل کر کام کرنا چاہیے۔

ادھر یوکرین کے صدر ولودی میر زیلنسکی نے ماریوپول شہر کی تباہی کو شام میں ہونے والی بربادی سے تشبیہ دی ہے۔ دوحہ فورم سے خطاب کرتے ہوئے زیلنسکی نے کہا کہ روسی افواج ماریوپول شہر میں امدادی سامان داخل ہونے کی اجازت نہیں دے رہی ہیں۔ ان کے مطابق ماسکو اُن سیکورٹی ضمانتوں پر عمل نہیں کر رہا جن کا اُس نے یوکرین سے وعدہ کیا تھا۔

دوحہ فورم میں گفتگو کرتے ہوئے یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کے رابطہ کار جوزپ بوریل نے کہا کہ "ہم مشرق اور مغرب کے بیچ ایک نئی سرد جنگ سے گریز کے لیے کوشاں ہیں"۔

انہوں نے واضح کیا کہ موجودہ بحران روس اور مغرب کے درمیان مقابلے سے زیادہ بڑا ہے۔ ایران کے حوالے سے بوریل نے کہا کہ "ہم اس بات کے خواہش مند ہیں کہ ایران جوہری طاقت نہ بن سکے"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں