دنیا امدادمیں اضافہ نہیں کرتی توافغانستان میں زچّہ وبچّہ کی صحت خطرے میں ہے:ریڈکراس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

بین الاقوامی ریڈکراس کمیٹی (آئی سی آر سی) نے خبردار کیا ہے کہ اگرعالمی برادری نے افغانستان کے’’ازکاررفتہ بنیادی ڈھانچے‘‘کی معاونت کے لیے کوئی قدم نہیں اٹھایا تو جنگ زدہ ملک میں زچّہ وبچّہ دونوں کی صحت خطرے میں رہے گی۔

آئی سی آرسی کے صدر پیٹر مورر نے افغانستان میں 2022 میں انسانی امداد کے لیے ردعمل حوالے سے اعلیٰ سطح کے پروگرام سے قبل کہا ہےکہ افغانستان میں زچگی کے دوران اموات کی بلندشرح کے پیش نظر کمیٹی کی معاونت سے قائم کردہ اسپتال کام کررہے ہیں جہاں صحت کی خصوصی خدمات، خاص طور پرزچگی کے وقت صحت کے مسائل سے نمٹنے اور قبل از پیدائش/نوزائیدہ بچّوں کی دیکھ بھال کے علاوہ حاملہ خواتین کو مشاورت مہیا کی جارہی ہے اوریہ حاملہ خواتین اور نوزائیدہ بچّوں دونوں کے لیے اہمیت کی حامل ہے۔

انھوں نے جمعرات کو ایک بیان میں کہا کہ ہماری ترجیح افغانستان میں صحت کے نظام کی معاونت کرنا ہے،اس ضمن میں عالمی برادری کوبھی اپنی امداد میں اضافہ کرنا ہوگا کیونکہ انسانی تنظیمیں فعال سرکاری شعبے کی مؤثر جگہ نہیں لے سکتیں اور نہ ہی وہ افغان آبادی کی ضروریات کومکمل طور پر پورا کر سکتی ہیں۔

بیان میں وضاحت کی گئی ہے کہ افغانستان میں بنک کاری نظام اور لیکویڈیٹی بحران نے صحت عامہ کے بنیادی ڈھانچے کوعملہ کی تنخواہوں، فعال رہنے کے اخراجات، ادویہ اور ایمبولینسوں کو چلانے کے لیے درکار فنڈ سے محروم کردیا ہے ۔چناں چہ اس ضرورت کو پورا کرنے کے لیے آئی سی آر سی نے نومبر 2021 میں 33 اسپتالوں کو مالی اور تکنیکی معاونت کا آغاز کیا تھا تاکہ لوگوں کی علاج معالجے تک مفت رسائی کو یقینی بنایا جا سکے۔

بین الاقوامی امدادی تنظیم نے اپنے بجٹ میں قریباً پانچ کروڑ70 لاکھ ڈالر کی توسیع کا اعلان کیا ہے جس سے افغانستان میں مجموعی آپریشنل بجٹ قریباً 21کروڑ 60 لاکھ ڈالر تک بڑھ گیا ہے۔

کمیٹی نے ابتدائی طور پرچھے ماہ کے لیے 18 اسپتالوں کی معاونت کی غرض سے اپنا’’اسپتال امدادی منصوبہ‘‘ شروع کیا تھا لیکن اب اس کے ذریعے مجموعی طور پرجنگ زدہ ملک میں 33 اسپتالوں کی مدد کی جارہی ہے۔ان میں آٹھ تدریسی اسپتال بھی شامل ہیں جو ہرسال شعبہ صحت میں ہزاروں پیشہ ور مردوخواتین کی تصدیق کرتے ہیں۔

اب یہ منصوبہ صحت کی دیکھ بھال کرنے والے قریباً دس ہزار ملازمین اور کارکنان پر مشتمل عملہ کی تنخواہیں، ادویہ کی لاگت اور اسپتال چلانے کے اخراجات ادا کرتا ہے۔تنظیم کے مطابق مجموعی بجٹ کوسال کے آخر تک اسپتالوں اور طبی عملہ کو معاونت مہیا کرنے کے لیے استعمال کیا جائے گا۔اس سے ماہانہ 750,000 مریضوں کی مشاورت ممکن ہو سکے گی اور حراستی مراکز میں کمیٹی کے تحفظ اور معاونت کے کام میں توسیع کی جائے گی۔اس میں 10 ہزارقیدیوں کوخوراک مہیا کرنے،خوراک کی مسلسل ترسیل اورغذائیت کے انتظام کے ذریعے جیل حکام کی مدد شامل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں