سوویت لیڈرسٹالن کی کن حرکتوں کی وجہ سےاس کی بیوی کو خود کشی کرنا پڑی تھی؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

اپنی زندگی کے دوران سوویت رہ نما جوزف اسٹالن نے دو بار شادی کی۔ دوسری شادی سے ان کےتین بچے پیدا ہوئے۔ ان کے نام یاکوف، سویٹلینا اور واسیلی تھے۔ اگرچہ وہ تقریباً ایک چوتھائی صدی تک سوویت یونین کو اپنی گرفت میں لیے رکھنے میں کامیاب رہے اور ریاست کے سیاہ سفید کے مالک تھے۔ انہوں نےدوسری جنگ عظیم میں ایڈولف ہٹلر کو شکست دینے اور جرمنوں کوسوویت سرزمین سے نکال باہر کرنے میں کامیاب رہے مگر سٹالن کی ازدواجی زندگی کامیاب نہ ہو سکی۔

سنہ 1907 میں سوویت لیڈر نے اپنی پہلی بیوی کاٹو سوانیڈزے کو کھو دیا، جس کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ ٹائفس سے مر گئی تھی۔ 1919 میں سٹالن نے نادیزہدا الیلوئیفا نامی خاتون سے دوسری شادی کی جو ان سے 23 سال چھوٹی تھی۔

اسٹالن سے شادی

نادیہ 22 ستمبر 1901 کو باکو میں پیدا ہوئیں جو اس وقت روسی سلطنت کا حصہ تھا۔ دریں اثنا نادیہ کے والد سٹالن کے دوست اور بالشویک پارٹی کے رکن تھے۔ مؤخر الذکر نے اپنے خاندان کے ساتھ سینٹ پیٹرزبرگ میں رہنے کا فیصلہ کیا جو بیسویں صدی کے آغاز سے لے کر اب تک بہت سے سیاسی ہنگاموں کا مرکز رہا ہے جن کے نتیجے میں مارچ 1917 کے وسط میں زار کی حکومت کی رخصتی ہوئی تھی۔ زار نکولس II کا تخت سے دستبردار ہونا پڑا۔

جوزف سٹالن کے ساتھ پہلے سے واقفیت کی وجہ سے نادیہ الیلوئیفا اٹھارہ سال کی عمر میں سٹالن سے شادی کرنے پر راضی ہو گئیں۔انہوں نے 1921 میں واسیلی اور 1926 میں سویٹلینا کو جنم دیا۔

نادیہ نے کئی بالشویک رہ نماؤں کلینن اور سٹالن کی سیکرٹری کے طور پر کام کیا۔ اس کے بعد مصنوعی ریشوں کے شعبے میں بیچلر آف انجینئرنگ حاصل کرنے کے لیے ماسکو کے انڈسٹریل انسٹی ٹیوٹ میں شامل ہوئیں۔ دوسری جانب اس نوجوان روسی خاتون کو صحت کے بہت سے مسائل کا سامنا کرنا پڑا جس کی وجہ سے اس کی پڑھائی اور خاندانی زندگی متاثر ہوئی جس کا 1931 میں افسوسناک انجام ہوا۔

سٹالن کی بیوی نے خودکشی کر لی

نومبر 1932 میں نادیہ اپنے تعلیمی کیرئیر کے اختتام اور انجینئرنگ کی ڈگری حاصل کرنے سے چند ہفتے دور تھیں۔ اسی مہینے کی سات تاریخ کو مؤخر الذکر نے بالشویک انقلاب کی پندرہویں سالگرہ کی یاد میں ہونے والے ایک مظاہرے میں شرکت کی جس میں سٹالن اور کمیونسٹ پارٹی کے کئی سینئر رہنما بھی تھے۔

شام کو نادیا الیلیوئیفا اور ان کے شوہر جوزف اسٹالن کریملن میں سوویت عہدیدار کلیمنٹ وروشیلوف کی میزبانی میں ایک تقریب میں شرکت کے لیے گئے۔ جشن کے دوران شراب کے نشے میں دھت اسٹالن نے موقع پر موجود خواتین کے قریب جانے کی کوشش کرنے لگے۔ اس پر ان کی اہلیہ کو سخت غصہ آیا۔ دونوں میں زبانی تکرار کے بعد سٹالن نے سامعین کے سامنے نادیہ الیلوئیفا کی توہین کی۔ اس صورت حال کا سامنا کرتے ہوئےنادیہ نے اپنی ایک سہیلی کے ساتھ کریملن کے قریب سیر کے لیے چلی گئیں۔

9 نومبر 1931 کی صبح نادیا الیلیوئیفا نے والتھر پی پی پستول سے خود کو گولی مار کر اپنی زندگی کا خاتمہ کر لیا۔ یہ سن کر سٹالن حیران رہ گیا اور اس نے خود کشی کے بارے میں سچائی چھپانے کا حکم دیا۔ میڈیا حکام سے مطالبہ کیا کہ وہ اپینڈیسائٹس کو اس کی موت کی وجہ قرار دے۔

نادیہ کی موت کے واقعے نے اسٹالن کے بچوں کو بہت متاثر کیا۔ 1942 میں ایک برطانوی اخبار میں سچائی دریافت کرنے سے پہلے سویٹلینا نے اپنی والدہ کی اپینڈیسائٹس سے موت پر یقین کیا اور کہا کہ اس نے صرف اپنے والد کے ساتھ اس کے تعلقات کی وجہ سے صدمے کا سامنا کیا۔ دوسری طرف سٹالن نے اپنے بیٹے واسیلی کو نظر انداز کر دیا جس نے کم عمری میں ہی شراب پینا شروع کر دی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں