حج وعمرہ

رمضان میں لاکھوں معتمرین کا مجمع منظم کرنے کا طریقہ کار کیا ہے؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

حرمین شریفین کے امور کی انتظامیہ میں 'کراؤڈ کنٹرول' کے ڈائریکٹر اسامہ الحجیلی کے مطابق انتظامیہ نے رواں سال رمضان مبارک کے لیے خصوصی منصوبہ وضع کیا ہے۔ اس منصوبے کی بنیاد معتمرین اور نمازیوں کی نقل و حرکت اور اس میں توازن ہے۔

الحجیلی منگل کے روز العربیہ نیوز چینل پر نشر ہونے والے پروگرام "نشرة الرابعة" میں گفتگو کر رہے تھے۔ انہوں نے بتایا کہ رواں سال مجمع منظم کرنے کے منصوبے کا نمایاں ترین محور یہ ہے کہ مطاف کا صحن، زمینی منزل اور مسعیٰ کی تمام منزلیں معتمرین کے لیے مختص ہوں گی جب کہ مسجد حرام کی پہلی منزل، تمام صحن، شاہ فہد توسیع کی چھت اور تیسری سعودی توسیعی کی تمام منزلیں نمازیوں کے لیے مختص ہوں گی۔

انہوں نے مزید بتایا کہ مسجد حرام کے تمام حصوں میں 100 دروازوں کو معتمرین اور نمازیوں کے لیے مختص کیا گیا ہے۔ اس سلسلے میں 330 اہل کاروں کو تعینات کیا گیا ہے جو مقررہ دروازوں کے راستے نمازیوں اور معتمرین کے داخلے کا عمل منظم کریں گے۔

حرمین شریفین کی انتظامیہ نے نمازیوں کے داخلے کے لیے 48 اور معتمرین کے داخلے کے لیے 38 دروازے مختص کیے ہیں۔ ان کے علاوہ 4 دروازے معتمرین کے واسطے ہنگامی خدمات کے لیے اور 10 دروازے دیگر خدمات کے واسطے مختص کیے گئے ہیں۔

اسی طرح دوسری سعودی توسیع کے اندر مردوں کے لیے 35 مصلّے اور خواتین کے لیے 30 مصلّے تیار کیے گئے ہیں۔ علاوہ ازیں اللہ کے گھر کے مہمانوں کی رہ نمائی کے واسطے روٹس مقرر کیے گئے ہیں۔ یہ تمام کوششیں حرمین شریفین کے امور کے نگرانِ اعلی شیخ ڈاکٹر عبدالرحمن السدیس کی ہدایات پر عمل میں آ رہی ہیں۔ ان کا مقصد رمضان مبارک کے سیزن میں زائرین اور معتمرین کو سعودی دانش مند قیادت کی امنگوں کے مطابق اعلی ترین خدمات پیش کرنا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں