روس اور یوکرین

کیف سے روس کا انخلاء محض نئی فوجی صف بندی ہے: یوکرین

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ماسکو نے چند روز قبل یوکرین کے دارالحکومت کیف کے قرب و جوار سے انخلاء کا اعلان کیا تھا۔ اس اعلان پر یوکرین کے نائب وزیر دفاع نے کل منگل کو کہا کہ کیف اور چرنیہیو کے علاقوں سے روسی افواج کا انخلاء فوج کشی کے لیے دوبارہ صف بندی کرنا ہے۔

نائب وزیر دفاع ھنا ملیار نے کہا کہ ان کا ملک تمام حالات کے لیے تیار ہے اور لڑتا رہے گا۔

انہوں مزید کہا کہ تمام خطوں میں شدید لڑائی جاری ہے۔ ہم فتح ضرور حاصل کریں گے لیکن راستہ طویل ہے اور اس کے لیے ہمیں کوشش اور صبر کی ضرورت ہے۔

انہوں نے وضاحت کی کہ جنگ جاری ہے۔آج ہم تمام ممکنہ منظرناموں پر غور کر رہے ہیں کہ یہ جنگ کیسے آگے بڑھائی یا روکی جا سکتی ہے۔"

قابل ذکر ہے کہ روسی افواج نے چند روز قبل یوکرینی افواج کے ساتھ شدید تصادم کے بعد دارالحکومت کیف کے قرب و جوار سے پسپائی اختیار کر لی تھی جب کہ ماسکو نے انخلاء کو جذبہ خیر سگالی قرار دیا تھا تاکہ گذشتہ جمعے کو ہونے والے مذاکرات کو آگے بڑھایا جا سکے۔ دونوں فریقین نے ویڈیو کے ذریعے اور مذاکرات کاروں کی پیر کو دوبارہ ملاقات طے کی تھی، لیکن دونوں فریقوں نے بات چیت کے بارے میں کوئی نئی بات ظاہر نہیں کی۔

تاہم بوچا میں جو کچھ ہوا اس کے بارے میں دونوں ممالک ایک دوسرے پر الزامات عاید کررہے ہیں۔ روس نے بوچا میں قتل عام کو فراڈ قرار دیا ہے جب کہ یوکرینی حکام ان واقعات کو "جنگی جرائم" قرار دے کران کی آزادانہ تحقیقات کا مطالبہ کررہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں