فرانسیسی ماہرِ بشریات سعودی عرب میں خانہ بدوشوں پر روشنی ڈالیں گے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

العربیہ نیوز چینل پر نشر ہونے والے پروگرام "نظرة على الشرق" کے پہلے پروگرام میں فرانسیسی استاد اور ماہرِ بشریات فرانسوا بیون مہمان ہوں گے۔ پروگرام میں وہ 1970ء کی دہائی میں شمالی افریقا اور مشرق وسطی میں خانہ بدوش معاشروں سے متعلق اپنے تحقیقی مطالعے اور سعودی عرب کے سفر کے طویل تجربات بیان کریں گے۔ وہ کئی برس مملکت میں قیام پذیر رہے۔ اس دوران انہوں نے متعدد دیہات اور شہروں کا دورہ کیا۔ اس حوالے سے بیون کے تحریر کیے گئے تحقیقی مقالات اور کتب آج مغربی جامعات میں اکیڈمک مراجع کی حیثیت رکھتی ہیں۔

بیون کا شمار فرانس میں ایک نمایاں ترین ماہر سماجیات اور ماہر بشریات میں ہوتا ہے۔ انہوں نے سربون یونیورسٹی میں فلسفلے کی تعلیم حاصل کی۔ وہ 1967ء میں ڈپارٹمنٹ آف ایڈوانس اسٹڈیز سے فارغ التحصیل ہوئے۔

بیون 1971ء میں پیرس میں اطلاقی مطالعے کے اعلی ادارے EPHE میں تدریس سے وابستہ ہوئے۔ اس کے بعد سماجی مطالعے کے ہائر اسکول میں بھی بطور استاد کام کیا۔ وہ عرب دنیا میں علم بشریات کی چیئر کے منصب پر بھی فائز رہے۔ بیون 2013ء میں ریٹائر ہو چکے ہیں۔ وہ عرب معاشروں کے حوالے سے علم بشریات سے متعلق تحقیقی مقالات اور تجزیے شائع کرتے رہتے ہیں۔

فرانسوا بیون اپنے کیرئر کے دوران میں عرب ثقافت بالخصوص خانہ بدوش ثقافت کے علم بردار رہے ہیں۔ وہ خانہ بدوشی کو تہذیب کا ایک حصہ شمار کرتے ہیں۔ انہوں نے مراکش اور خلیجی ممالک میں خانہ بدوش عناصر کے ساتھ وقت گزارا اور ان کے رہن سہن اور عادات و رواج کا قریب سے جائزہ لیا۔ بیون نے عربی شاعری، ادب، فن اور زبان میں خانہ بدوش ثقافت کے عناصر کا بھی مطالعہ کیا۔

العربیہ نیوز چینل پر نشر ہونے والا پروگرام "نظرة على الشرق" ایک ایسا پلیٹ فارم ہے جہاں مشرق کے معاملات میں دل چسپی رکھنے والے مغربی اکیڈمکس ، محققین اور سائنس دانوں کا تعارف کرایا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں