برطانیہ کا یمن میں تمام طبقات کی "نمائندہ" حکومت بنانے کی کوششوں کا خیر مقدم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

برطانوی وزیر خارجہ لز ٹروس نے یمن میں حکومت تشکیل دینے کی کوششوں کا خیر مقدم کیا۔

انہوں نے مجوزہ حکومت کو زیادہ نمائندہ" قرار دیتے ہوئے سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کی جانب سے 3 ارب ڈالر کے امدادی پیکج کی فراہمی کے اعلان کا بھی خیر مقدم کیا۔

انہوں نے کہا کہ یمن میں تمام فریقوں کو امن کے لیے سیاسی مذاکرات کی خاطر اقوام متحدہ کے ایلچی کے ساتھ مل کر کام کرنا چاہیے۔

یمن کے سابق صدر عبد ربہ منصور ہادی نے جمعرات کے روز ملک میں عبوری مرحلے کا انتظام کرنے اور آئین، خلیجی اقدام اور اس کے انتظامی طریقہ کار کے مطابق اپنے اختیارات اسے منتقل کرنے کے لیے صدارتی لیڈرشپ کونسل کے قیام کا اعلان کیا۔

صدارتی بیان میں واضح کیا گیا کہ یمن میں نئی صدارتی کمانڈ کونسل عبوری دور میں ملک کا سیاسی، فوجی اور سکیورٹی انتظام سنبھالے گی اور صدارتی کمان کونسل جنگ بندی پر حوثیوں کے ساتھ بات چیت کرے گی۔

رشاد محمد العلیمی کو کونسل کا صدر مقرر کیا گیا ہے۔ کونسل میں سلطان العرادہ، طارق صالح، عبدالرحمٰن ابو زرعہ، عبداللہ العلیمی، عثمان مجلی، عیدروس الزبیدی اور فراج البحسانی شامل ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں