سعودی آرٹسٹ کی العلا کی پہاڑیوں کی قدیم زبانوں کو اپنے فن سے محفوظ رکھنے کی کوشش

آرٹسٹ رشا الجود نے العلا کی چٹانوں پر پرانی زبانوں کے نقوش کو فن کی شکل دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

خطاطی کی مختلف زبانوں میں سعودی عرب کی ایک خاتون آرٹسٹ رشا الجود نے پہاڑی چٹانوں پر انتہائی اہم نوشتے تحریر کیے۔ اس نے کوئی دو چار پتھروں پر پرانی زبانوں کے نقوش نہیں بنائے بلکہ وہ اب تک تقریباً 15000 ایسے فن پارے بنا چکی ہیں۔ ان میں مملکت کے 7 خطوں میں اور بیرون ملک کے علاقوں کی چٹانوں پر فن بارے بھی شامل ہیں۔

رشا الجود نے اپنے آرٹ کے ذریعے سیاحوں کو سعودی عرب کی تاریخ، تہذیب اور پرانی ثقافت کے بارے میں جان کاری کا منفرد طریقہ اختیار کیا۔

"العربیہ ڈاٹ نیٹ" سے خصوصی انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ ہر آرٹسٹ کی ایک شناخت ہوتی ہے جو اس کے فنی جنون سے شروع ہوتی ہے اور اس کے لیے ایک مستقبل بناتی ہے۔ میں نے عربی خطاطی کے مقابلے کوفی خطاطی میں سیکنڈری مرحلے میں کام شرو کیا۔ خطاطی کے میدان میں میرے ساتھ کئی لڑکیوں اور لڑکوں کا مقابلہ تھا اور میں نے اس مقابلے میں تیسری پوزیشن حاصل کی۔وہاں سے میں نے عربی خطاطی کی دنیا میں سفر کا فیصلہ کیا اور اس کے ماخذ کے بارے میں علم حاصل کرنا شروع کردیا۔ آج اسی کوشش کی بدولت میں خطے میں کوفی خطاطوں میں اپنا ایک مقام اور شہرت رکھتی ہوں۔

انہوں نے بتایا کہ جب تک کہ میں خطافی میں ماہر نہیں ہوئی اس وقت تک خود سیکھنے کا سلسلہ جاری رکھا۔

اپنے فنی نقطہ نظر کے بارے میں انہوں نے کہا کہ ہر فنکار کا اپنی فنی شناخت کو اجاگر کرنے کا اپنا انداز ہوتا ہے۔ ہر آرٹسٹ مختلف تکنیکوں کے ساتھ اپنا الگ نشان بناتا ہے جو اس کے فنی نقطہ نظر اور شخصیت کو مجسم کرتا ہے۔

میں نے خطاطی کو چٹانوں پر منقش کرنے کا طریقہ اپنایا۔ میں تاریخ اور اس خطے کے جغرافیے، جہاں آثار قدیمہ کے علاقے واقع ہیں، پہاڑی چٹانوں پر لکیروں اور نوشتوں کو مجسم کرنے کے خیال سے متاثر ہوئی۔

رشا نے مزید کہا کہ وہ کوفی حروف اور قدیم نوشتہ جات سے محبت کرتی ہیں جیسے دادانی کا نوشتہ جو کہ العلا پہاڑوں کی خصوصیت رکھتا ہے۔ اس کے علاوہ حکمت سے بھرپور عبارتیں اور قرآنی آیات کھےنقوش اس کی پسند رہی۔

جب ان سے پوچھا گیا کہ آرٹ کے میدان میں انہیں کس طرح کی مشکلات پیش آئیں تو ان کا کہنا تھا کہ اپنے پروجیکٹ کے دوران سب سے نمایاں رکاوٹوں جدید آلات کی فراہمی دشواری، آلات اور ڈیوائسز کی کمی ایک بڑی رکاوٹ تھی۔ اس نے نوجوان مردو خواتین آرٹسٹوں کو مشورہ دیا کہ وہ اپنی صلاحیتوں اور خود پر اعتماد رکھیں العلا کو ایک اہم ثقافتی اور سیاحتی مقام کے طور پر پیش کرنے میں اپنا حصہ ڈالیں۔

ان کا کہنا تھا کہ والدین کی حوصلہ افزائی ترقی اور تسلسل کی سب سے اہم وجوہات میں سے ایک ہے۔ مجھے العلا گورنری میں رائل کمیشن سے زبردست تعاون حاصل ہوا، جس نے ترقی اور تربیت میں میری مدد کی۔

میں پتھروں پر العلا سے متاثر کن جملے لکھنے کا انتخاب کرتی ہوں۔ جیسے کہ العلا کا نام، نشانات، تاریخ، تہذیب، نیز قرآنی آیات، حکمت اور ضرب المثل اس کے نقوش میں سب سے زیادہ لکھی جانے والی عبارتیں ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں