مشق کے دوران تونس کی ایک اولمپک چیمپئن ڈوب کر ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

بین الاقوامی اولمپک کمیٹی نے سوموار کے روز اعلان کیا کہ تونس کی نوجوان خاتون آیا قزقزجس نے گذشتہ موسم گرما میں ٹوکیو اولمپکس میں اپنے ملک کی نمائندگی کی تھی 17 سال کی عمر میں قومی ٹیم کی تربیت کے دوران ایک حادثے میں چل بسی۔

یہ حادثہ اتوار کو اس وقت پیش آیا جب وہ اپنی جڑواں بہن اور شریک اولمپک پارٹنر سارہ کے ساتھ بادبانی کشتی پر سوار تھی۔ کشتی تیز ہوا میں الٹ گئی۔ آیا ڈوب گئی جبکہ اس کی بہن کو بچا لیا گیا۔

اتھارٹی کی ویب سائٹ پر ایک بیان میں بین الاقوامی اولمپک کمیٹی کے صدر جرمن تھامس باخ نے کہا مجھے کشتی رانی کی چیمپئن آیا قزقز کی موت کی خبر سے صدمہ پہنچا ہے۔ وہ اپنی نسل کے کھلاڑیوں کے لیے ایک متاثر کن ٹیلنٹ اور رول ماڈل تھیں۔

انہوں نے جاری کہا کہ آیا قزقز کی اپنی جڑواں بہن سارہ کے ساتھ ٹوکیو اولمپکس میں شرکت ہر جگہ لڑکیوں کی حوصلہ افزائی کرتی رہے گی۔ ہمارے خیالات اس کے خاندان، دوستوں اور تونس میں اولمپک کمیونٹی کے ساتھ ہیں۔

دونوں بہنوں نے ٹوکیو اولمپکس میں 49fx خواتین کے ونڈ سرفنگ ایونٹ میں حصہ لیا اور دونوں نے 21ویں نمبر پر کامیابی حاصل کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں