روس اور یوکرین

روسی بحری جنگی جہاز’کروزر ماسکوا‘غرق، المناک دھچکا ہے: پینٹا گان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

بڑے تنازعہ کے بعد روسی وزارت دفاع نے جنگی جہاز ماسکوا کی قسمت کا فیصلہ کرتے ہوئے جمعرات کی شام اس بات کی تصدیق کی کہ یہ طوفان اور خراب موسمی حالات کی وجہ سے بندرگاہ پر لے جانے کے دوران ڈوب گیا۔

وزارت نے واضح کیا کہ جنگی بحری جہاز اس وقت استحکام کھو بیٹھا جب اسے منزل کی بندرگاہ پر لے جایا گیا۔ جہاز کے ڈھانچے میں خرابی پیدا ہونے کے بعد اسے مرمت کے لیے بندرگاہ لے جایا جا رہا تھا مگر وہ راستے ہی میں ڈوب گیا۔

کروزر ماسکوا کے عملے کو بحیرہ اسود کے بحری بیڑے سے تعلق رکھنے والے بحری جہازوں تک پہنچا دیا گیا ہے۔

دردناک دھچکا

امریکی محکمہ دفاع (پینٹاگان) نے جنگی کروزر کے ڈوبنے کا اعلان کیا ہے جو بحیرہ اسود میں روسی بحری بیڑے کے لیے ایک دردناک دھچکا ہے۔

پینٹاگان کے ترجمان جان کربی نے CNN کو بتایا کہ یہ بحیرہ اسود کے بحری بیڑے کے لیے ایک بڑا دھچکا ہے۔ یہ بحیرہ اسود میں کسی قسم کا بحری کنٹرول حاصل کرنے کی ان کی کوششوں کا ایک بڑا حصہ تھا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس کا اثر روس کی جنگی صلاحیتوں پر پڑے گا۔

اس سے قبل پینٹاگان کے ترجمان جان کربی نے کہا تھا کہ جہاز تیر رہا تھا اور ڈوبا نہیں تھا۔

متضاد بیانات

روسی وزارت دفاع نے اس سے قبل تصدیق کی تھی کہ کروزر جو کہ روسی بحیرہ اسود کے بحری بیڑے کے کمانڈر نے کہا تھا کہ جہاز نہیں ڈوبا۔ انہوں نے مزید کہا کہ بدھ کو جہاز پر ہونے والے دھماکوں کے بعد اسے روک دیا گیا تھا۔

ان کا کہنا تھا کہ جہاز میں لگنے والی آگ پر قابو پالیا گیا ہے۔ اب مزید شعلے نہیں ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں