یمن اور حوثی

حوثیوں کو جنگ بندی کے دوران طاقت جمع کرنے سے روکا جانا چاہیے: یمنی وزیر خارجہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمنی وزیر خارجہ احمد بن مبارک نے حوثیوں کو جنگ بندی سے ناجائز فائدہ اٹھاتے ہوئے اپنی طاقت مجتمع کرنے اور دوبارہ فعال ہونے روکنے کی ضرورت پر زور دیا۔

یمنی وزیر خارجہ نے اقوام متحدہ کے ایلچی کو جنگ بندی کو مضبوط بنانے کے لیے تعز آمد و رفت کے راستے کھولنے کی ضرورت پر زور دیا۔

اس سے پہلے یمنی حکومت کے وزیر اعظم معین عبدالملک اور تمام وزرا عدن پہنچے تھے۔ قبل ازین یمنی پارلیمنٹ کے اسپیکر سلطان البرکانی اور کونسل کی صدارت کے ارکان بھی عدن پہنچے۔

پارلیمنٹ کے دوسرے سیشن کا پہلا اجلاس مختلف امور اور کمیٹیوں کی تشکیل پر بحث کے لیے منعقد کرے گا۔ اجلاسوں میں تمام ریاستی اداروں کے عارضی دارالحکومت عدن میں منتقل کرنےپر غور کیا جائے گا۔

یمن کی پارلیمنٹ اور ریاستی اداروں کی عدن میں واپسی اگلے مرحلے کے دوران ریاست کی بحالی، معاشی چیلنجوں پر قابو پانے، عوام کی تکالیف کو دور کرنے کے پہلوؤں ، امن وامان اور ریاستی اداروں کے کام کو موثر طریقے سے فعال کرنے پر بھی بات کی جائے گی۔

ذرائع نے "ارم نیوز" ویب سائٹ کے حوالے سے بتایا کہ ہفتہ کی شام ریاض میں موجود تمام فریقین کو ہدایات جاری کی گئیں کہ ہر کوئی اپنی رہائش گاہوں کی پابندی کرے اور جس ہوٹل میں وہ ٹھہرے ہیں وہاں رہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ حملوں کے خوف سے آئینی حکومت کے وزرا کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ اپنے ٹھکانوں کے بارے میں نشاندہی نہ کریں اور اپنی آمد کی تاریخ ظاہر کرنے سے گریز کریں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ یمن کی وزارت خارجہ نے زور دیا ہے کہ حوثی باغی جنگ بندی کے موقعے سےناجائز فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔ انہیں جنگ بندی کے عرصے کے دوران اپنی قوت مجتمع کرنے سے روکا جانا چاہیے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں