روس اور یوکرین

یوکرین میں گرفتاردوبرطانوی روسی سرکاری ٹی وی پرنمودار،سیاست دان کے بدلے رہائی کی اپیل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

روسی افواج کے ہاتھوں یوکرین میں پکڑے گئے دو برطانوی جنگجو پیر کے روز روسی سرکاری ٹی وی پر نمودار ہوئے ہیں۔ان کے بارے میں کہا گیا ہے کہ انھیں ایک روس نوازسیاست دان کے بدلے میں رہا کیا جائے گا جسے یوکرینی حکام نے گرفتار کررکھاہے۔

یہ واضح نہیں تھا کہ دونوں افراد۔۔۔شان پنر اور ایڈن اسلین ۔۔۔۔۔کتنا آزادانہ طور پر بات کرنے کے قابل تھے۔ ایک نامعلوم شخص کی طرف سے ترغیب ملنے کے بعد دونوں نے الگ الگ بات کی ہے۔ یہ فوٹیج سرکاری ٹی وی چینل روسیا24 پر نشر کی گئی ہے۔

ان دونوں افراد نے برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ یوکرین میں گرفتار روس نواز سیاستدان وکٹر میدویدچَک کی رہائی کے بدلے میں انھیں وطن لانے میں مدد کریں۔میدویدچَک کو پیر کے روز یوکرین کی ایس بی یو انٹیلی جنس سروس کی جانب سے جاری کردہ ایک ویڈیو میں دکھایا گیا تھا۔انھوں نے بھی قیدیوں کے تبادلے میں اپنی رہائی کا مطالبہ کیا تھا۔

میدویدچَک نے روسی صدر ولادی میر پوتین اور یوکرین کے صدر ولودی میرزیلنسکی سے اپنی اپیل میں کہا کہ محاصرہ زدہ شہرماریوپول میں محافظوں اور کسی بھی شہری کو وہاں سے جانے کی اجازت دی جائے۔پنر اور اسلین دونوں نے ماریوپول میں یوکرین کی طرف سے لڑائی میں حصہ لیا تھا۔یہ شہر اب روسی فوج کے قریب قریب مکمل کنٹرول میں ہے۔

روسی سرکاری ٹی وی پر دکھائے گئے نامعلوم شخص کو اپنے موبائل فون پر میدویدچک کی اہلیہ اوکسانا کی ویڈیو دکھاتے ہوئے دیکھا گیا جس میں انھوں نے ہفتے کے آخر میں اپنے شوہرکودونوں برطانوی شہریوں کے بدلے میں رہا کرنے کی اپیل کی تھی۔

24فروری کو روس کے یوکرین میں اپنی فوجیں داخل کرنے کے تین دن بعد یوکرینی حکام نے کہا تھا کہ میدویدچَک گھر میں نظر بند تھے اور وہ وہاں سے فرار ہوگئے ہیں۔ انھیں مئی 2021ء میں نظر بند کردیا گیا تھا اور ان پر سنگین غداری اور بعد میں دہشت گردی کی معاونت کا الزام عاید کیا گیا تھا۔

روسی فوج کے زیرحراست برطانوی شہر پنر نے ویڈیو میں حکومت سے اپیل کی ہے کہ مجھے وطن واپس بھیج دیا جائے، میں اپنی اہلیہ سے دوبارہ ملنا چاہوں گا۔پنر نے برطانوی وزیراعظم جانسن سے اپنی اور اسلین کی طرف سے براہ راست اپیل کی ہے۔

انھوں نے کہا کہ ’’ہم مسٹر میدویدچک کے بدلے میں رہائی چاہتے ہیں۔ ظاہر ہے کہ میں واقعی اس معاملے میں آپ کی مدد کی تعریف کروں گا‘‘۔انھوں نے کہا کہ وہ تھوڑی بہت روسی بولتے ہیں اور ان کے ساتھ اچھا سلوک کیا گیا ہے۔

اس کے بعد نامعلوم شخص کو اسلین سے بات کرتے ہوئے دکھایا گیا جو یوکرین کی انتہائی دائیں بازو کی ازوف بٹالین کے نشان والی ٹی شرٹ پہنے کرسی پر بیٹھا تھا۔اسلین نے کہا کہ میں سمجھتا ہوں کہ بورس کو اوکسانا (میدویدچَک کی اہلیہ) کی بات سننے کی ضرورت ہے۔

انھوں نے کہا کہ ’’اگر بورس جانسن واقعی برطانوی شہریوں کی پرواکرتے ہیں جیسا کہ وہ کہتے ہیں کہ وہ کرتے ہیں تو وہ ہماری مدد کریں گے‘‘۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں