لیبیا میں فوجی کیمپ پربارود سے بھری کار سے حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لیبیا جنوب میں واقع شہر سبھا کے ام الارانب کے علاقے میں لیبیا کی فوج سے تعلق رکھنے والے ایک سیکیورٹی گیٹ کو ایک کار بم نے نشانہ بنایا گیا ہے تاہم اس حملے میں اب تک کسی قسم کے جانی نقصان کی اطلاع نہیں ملی۔

تفصیلات کے مطابق لیبیا کی فوج کے شعبہ اخلاقی رہ نمائی کے ڈائریکٹر میجر جنرل خالد المحجوب نے بتایا کہ یہ دہشت گردانہ حملہ پیر کی شام کو "طارق بن زیاد" بٹالین کے صحرائی پٹرولنگ کمپنی کے کیمپ کے سامنےام الارنب میں ریموٹ آپریشن ٹیکنالوجی سےکیا گیا جس میں ایک کار کو بم دھماکے میں استعمال کیا گیا۔

سوشل میڈیا پر گردش کرنے والی ویڈیو میں دھماکے کے اثرات اور اس سے ہونے والی تباہی دکھائی گئی ہے۔اس سے کار بم کے ساتھ سیکیورٹی گیٹ اور اس کے قریب کھڑی متعدد کاریں بھی متاثر ہوئیں۔

اب تک کسی فریق نے اس بم دھماکے کی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے لیکن شبہ ہے کہ ’داعش‘ نے یہ حملہ کیا ہے جو اس سے قبل بھی اس طرح کی کارروائیوں کی ذمہ داری قبول کرچکی ہے۔

سبھا اور اس کے پڑوسی شہروں میں گذشتہ برسوں میں تشدد، دہشت گردانہ حملوں اور بم دھماکوں کے واقعات رونما ہوئےہیں۔ ان شہروں کو امریکی فضائی حملوں سے بھی نشانہ بنایا گیا ہے۔ ان حملوں میں قریبی صحرائی علاقوں میں سرگرم "دہشت گرد" تنظیموں کے رہ نماؤں اور باقیات کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں