لیبیا میں مسلح جھڑپوں سے مرکزی آئل ریفائنری متاثر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لیبیا کے مغربی شہر الزاویہ میں مسلح گروہوں کے درمیان جھڑپوں سے ملک کی مرکزی آئل ریفائنری کے بنیادی ڈھانچے کو شدید نقصان پہنچنے کی اطلاعات ہیں۔

نیشنل آئل کارپوریشن نے ہفتے کے روزایک بیان میں اعلان کیا کہ جُمعہ کی شام ہونے والی مسلح جھڑپوں کی وجہ سے ایک ریفائنری میں 29 سائٹس بشمول آئل ڈیریویٹوز ٹینک اور کئی دیگر ٹینکوں کو مختلف نقصانات کا سامنا کرنا پڑا۔اب مرمت کرنے والی ٹیمیں دیکھ بھال کررہی ہیں۔

الزاویہ شہر میں جمعہ کی رات مُسلح ملیشیا کے درمیان پرتشدد جھڑپیں ہوئیں جس کے نتیجے میں ہلاکتیں، زخمی اور مادی نقصان ہوا جب کہ سیاسی حکام نے جھڑپوں پر کوئی تبصرہ نہیں کیا۔

اس تناظر میں نیشنل آئل کارپوریشن نے زور دیا کہ وہ تحمل کا مظاہرہ کریں اور تیل کی تنصیبات کو کسی بھی مسلح کارروائی سے دور رکھیں جس سے مزدوروں کی زندگیوں کو خطرہ لاحق ہو اور تیل کے شعبے کے پہلے سے خستہ حال انفراسٹرکچر کو نقصان پہنچے۔

یہ پہلا موقع نہیں ہے کہ جھڑپوں کے نتیجے میں الزاویہ شہر میں تیل کے بنیادی ڈھانچے کو نقصان پہنچا ہے۔

الزاویہ شہر پرمسلح ملیشیا کا کنٹرول ہے اوران کے متضاد تعلقات ہیں اور اثر و رسوخ اور اسمگلنگ کے راستوں پر مسلسل لڑ رہے ہیں۔

الزاویہ شہر میں دارالحکومت طرابلس سے 40 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع ہے۔ ایک آئل کمپلیکس جس میں لیبیا کی سب سے بڑی آپریٹنگ آئل ریفائنری شامل ہے۔ شرارا فیلڈ سے منسلک ہے جس کی پیداواری صلاحیت تقریباً 300,000 بیرل یومیہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں