کرونا بیماری نے مصری اداکارا کو خدا یاد دلا دیا

حنان ماضی کا حجاب میں گلوکاری جاری رکھنے کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

گذشتہ صدی کی نوے کی دہائی میں شہرت پانے والی اور اپنی نسل کے ستاروں میں سے ایک مصری گلوکارہ حنان ماضی کی جانب سے اچانک حجاب اختیار کرنے کا فیصلہ کیا گیا جس پران کے مداح حیرت زدہ رہ گئے۔

حجاب میں اپنی تصویر جاری کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میں نے بیماری کے بحران کی وجہ سے یہ فیصلہ کیا ہے۔

جہاں حنان ماضی ’ایم بی سی مصر‘ اسکرین پر پہلی بار حجاب پہن کر اس بات کی تصدیق کے لیے نظر آئیں کہ انھوں نے یہ فیصلہ اس وقت کیا جب وہ ابھرتے ہوئے کرونا وائرس سے ’اومیکرون‘ میوٹینٹ سے متاثر ہوئی تھیں۔

اس وقت وہ اور اس کے گھر والے تمام احتیاطی تدابیر اختیار کر رہے تھے لیکن اس کی بہن اور بیٹی متاثر ہو گئیں اور پھر وہ خود بھی وبا کا شکار ہوگئیں۔

اس وقت اس کی بہن اور بیٹی جلد صحت یاب ہو گئیں لیکن حنان ماضی نے بہت مشکل دن گذارے اور اس کے ساتھ میں نے موت کی تکلیف کو محسوس کیا۔

اس عرصے کے دوران اس نے پردے کے بارے میں ایک مذہبی خطبہ سنا تو اس نے نقاب پہننے کا فیصلہ کیا۔

اس فیصلے نے اس کے پورے خاندان کو حیران کر دیا لیکن اس نے زور دے کر کہا کہ یہ صرف اس کا معاملہ ہے اور کسی کو اعتراض یا قبول کرنے کا حق نہیں ہے یہ اس پر منحصر ہے۔

اس نے کہا کہ مجھے ایسے لگا کہ میرا آخری وقت آگیا ہےاور مجھے خدا کے پاس جانا ہے۔ اس کی بیٹی نے اس سے پوچھا کہ کیا وہ گانا جاری رکھے گی یا نہیں؟ اس نے جواب دیا کہ وہ نقاب پہن کر بھی گائے گی۔ حنان ماضی نے’ابوالعروسہ‘ سیریز کے لیےحجاب میں گانا ریکارڈ کرایا۔

مقبول خبریں اہم خبریں