عراق کے عین الاسد ایئربیس پر تازہ راکٹ حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عراقی خبررساں ایجنسی "الانبا" نے بتایا ہے کہ کل ہفتے کے روز بغداد کے مغرب میں امریکی اور بین الاقوامی اتحادی فوج کے زیر استعمال عین الاسد فوجی اڈے راکٹوں سے حملہ کیا ہے جس کے نتیجے میں املاک کو نقصان پہنچا تاہم کسی قسم کا جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔

خبر رسان ادارے نے عالمی اتحادی فوج کے حوالے سے ایک بیان میں کہا کہ عین الاسد کے عراقی اڈے پر ہفتے کی شام 7 بج کر 55 منٹ پر حملہ کیا گیا جس کے بعد ایک راکٹ بیس کی حدود سےسے 4 کلومیٹر باہر گرا۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ اس حملے کے نتیجے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا اور عراقی سیکیورٹی فورسز اس معاملے کی تحقیقات کر رہی ہیں۔

دریں اثنا عراق میں سیکیورٹی میڈیا سیل نے انبار گورنری میں عین الاسد بیس کے باہر دو راکٹ گرنے کا اعلان کیا۔

سیل نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ہفتے کی شام صوبہ الانبار میں عین الاسد کے اڈے کے باہر دو میزائل گرے جس میں کوئی خاص نقصان نہیں ہوا۔ سیکیورٹی فورسزنے واقعے تحقیقات کا آغاز کیا۔

اے ایف پی کے مطابق حملے کی ذمہ داری ٹیلی گرام کے ذریعے ایک ایران نواز گروپ نے قبول کی تھی۔

قابل ذکر ہے کہ عین الاسد اڈے میں بین الاقوامی اتحاد کی فوجیں شامل ہیں لیکن یہ عراقی فورسز کے انتظام کے زیرانتظام ہے۔ اس فوجی اڈے کو ماضی میں متعدد بار راکٹوں،میزائلوں اور بمبار ڈرونز کی مدد سے حملوں کا ہدف بنایا جا چکا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں