روسی فوج نے انخلا کی کوششوں کے باوجود ماریوپول پلانٹ پردھاوا بول دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

یوکرین کی ازوف رجمنٹ نے منگل کے روز بتایا کہ روسی فورسز نے محصور بندرگاہ شہرماریوپول میں ازوفستل اسٹیل پلانٹ پر دھاوابول دیا ہے حالانکہ وہاں پناہ لینے والے درجنوں یوکرینی شہریوں کو نکالنے کی کوششیں جاری ہیں۔

یوکرین کی ازوف رجمنٹ کے ڈپٹی کمانڈر سویاتوسلاف پالمرنے کہا کہ روسیوں نے شدید حملہ کیا ہے۔طیاروں سے بم گرائے گئے ہیں۔ان مجرمانہ کارروائیوں کے نتیجے میں دو خواتین ہلاک ہوگئی ہیں اور قریباًدس شہری زخمی ہوگئے ہیں۔

انھوں نے مزید کہا کہ روسی فوج نے بکتربندگاڑیوں اور ٹینکوں کی مدد سے حملہ کیاہے، کشتیوں سے بڑی تعداد میں پیادہ فوج اتارنے کی کوششیں کی جا رہی ہیں۔ہم حملے کوروکنے کے لیے ہر ممکن کوشش کریں گے لیکن ہم پلانٹ کے اندر موجود شہریوں کو نکالنے اور انھیں محفوظ مقام تک لانے کے لیے فوری اقدامات کا مطالبہ کر رہے ہیں۔

ازوف بٹالین انتہائی دائیں بازو کی ملیشیا ہے اور یہ اب یوکرین کے نیشنل گارڈ کا حصہ ہے۔

روسی حملہ صدر ولادی میرپوتین کی جانب سے ماریوپول میں فتح کے اعلان کے قریباً دو ہفتے کے بعد کیا گیا ہے۔انھوں اپنی افواج کو حکم دیا تھاکہ وہ اس پلاںٹ پر حملہ نہ کریں بلکہ اس کی ناکا بندی کریں۔

روسی فوج نے یہ حملہ ایسے وقت میں کیا ہے جب اسٹیل پلانٹ سے بے دخل ہونے والوں کا پہلا قافلہ یوکرین کے زیر انتظام شہر زپوریژژیا پہنچا تھا۔اقوام متحدہ اور ریڈ کراس کی نگرانی میں ہفتے کے آخر میں مختصر جنگ بندی کے دوران میں یوکرینیوں کو وہاں سے جانے کی اجازت دی گئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں