سعودی عرب کی اراضی میں برقی گاڑیوں کی صنعت کے لیے اہم معدنیات کے ذخائر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں ایک ارضی طبیعیاتی سروے کے نتائج کا انتظار کیا جا رہا ہے تا کہ مملکت میں معدنیاتی ذخائر اور لیتھیم کی دھات کے نکالے جانے کے بارے میں انکشاف ہو سکے۔ یہ دھات برقی اور دگیر گاڑیوں کی بیٹریاں تیار کرنے میں کام آتی ہے۔

سعودی عرب میں صنعت اور معدنیاتی ثروت کی وزارت نے عربی اخبار "الاقتصادیہ" کو دیے گئے ایک بیان میں بتایا کہ مملکت میں کئی مقامات پر ہونے والے تحقیقی مطالعے سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ وہاں لیتھیم دھات دستیاب ہے تاہم اعداد و شمار کے زیادہ درست تعین کے لیے زیادہ بڑے پیمانے پر مطالعوں کی ضرورت ہے۔

مذکورہ وزارت نے ارضی طبیعیاتی سروے کا آغاز گذشتہ برس اگست میں کیا تھا۔ اس کا مقصد انتہائی درست حد تک مختلف نوعیت کی ارضیاتی معلومات اور علاقے میں معدنیاتی ذخائر کی جان کاری کا حصول ہے۔

سعودی عرب میں صنعتی ترقی کا قومی مرکز وزارت صنعت و معدنی دولت کے ساتھ تعاون سے مقررہ صنعتی سیکٹروں میں تقسیم کئی صنعتی منصوبوں کی ترقی اور جائزے پر کام کر رہا ہے۔ اس میں سرمایہ کاری کا حجم 40 ارب ریال ہے۔

مذکورہ مرکز کے نزدیک مملکت میں گاڑیوں اور ان کے پرزوں کی تیاری کی صنعت اُن تابناک صنعتوں میں سے ہے جن کو سعودی عرب کی قیادت کی خصوصی توجہ حاصل ہے۔

سعودی عرب اپنی اراضی میں موجود ضخیم معدنی دولت سے فائدہ اٹھانے کے لیے کوشاں ہے۔ مملکت قابل رسائی معدنی ذخائر کی مالیت کا اندازہ 13 کھرب ڈالر لگایا گیا ہے۔ ان میں 15 سے زیادہ ایسی معدنیات ہیں جن میں تجارتی صورت میں سرمایہ کاری کی جا سکتی ہے۔

سعودی عرب میں دستیاب اہم معدنیات میں فاسفیٹ ، سونا ، تانبا ، زنک ، خام فولاد ، یورینیم ، نیوبیم ، چاندی ، فیلسپیئر ، پوکسیٹ ، سیلیکا اور لائم اسٹون وغیرہ شامل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں