لندن: ملکہ کے محافظین کی بیرک میں "جعلی" پادری کے داخل ہونے کی تحقیقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

برطانوی فوج کے اعلان کے مطابق ملکہ الزبتھ دوم کی قیام گاہ ونڈسر پیلس کے نزدیک بیرک کے واقعے کی تحقیقات شروع کر دی گئی ہیں۔ اس سے قبل یہ خبر موصول ہوئی تھی کہ ایک شخص نے خود کو پادری ظاہر کر کے مذکورہ بیرک میں اُن برطانوی فوجیوں کے ساتھ رات گزاری تھی جو ملکہ کی حفاظت پر مامور ہیں۔

برطانوی اخبار The Sun کے مطابق اس نوسر باز کو بنا کسی شناختی دستاویز کے کولڈ اسٹریم گارڈز کی بیرکوں میں داخل ہونے کی اجازت دے دی گئی۔ اس شخص نے بیرک میں کھایا پیا اور وہاں موجود فوجیوں کے ساتھ گپیں لگائیں۔

اخبار کا کہنا ہے کہ یہ واقعہ گذشتہ بدھ کے روز پیش آیا تھا اور اس وقت ملکہ برطانیہ ونڈسر پیلس میں موجود نہیں تھیں۔

برطانوی وزارت دفاع کے ترجمان کے مطابق فوج اس سیکورٹی خلاف ورزی کو سنجیدگی سے لے رہی ہے۔ اس واقعے کی اولین ترجیحات پر باریک بینی سے تحقیق عمل میں آئے گی۔

اخبار کے مطابق فوجیوں کو مذکورہ شخص کے حوالے سے اس وقت شک گزرا جب اس نے بتایا کہ وہ ejector-seat test پائلٹ کے طور پر کام کر چکا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں