داعش نے 11 مصری فوجیوں کی ہلاکت کی ذمہ داری قبول کر لی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

مصر میں دہشت گرد تنظیم دولت اسلامیہ عراق وشام [داعش] سے منسلک تنظیم نے سویز نہر کے قریب ایک واٹر پمپنگ اسٹیشن پر حملے کی ذمہ داری قبول کر لی ہے جس میں کم از کم 11 مصری فوجی ہلاک ہو گئے تھے۔

مصری فوج کے مطابق ہفتے کے روز ہونے والے اس حملے میں کم از کم پانچ فوجی زخمی بھی ہوئے تھے۔ یہ حملہ حالیہ سالوں میں مصری فوج پر ہونے والا سب سے جان لیوا حملہ ہے۔

مصر کے صدر عبدالفتاح السیسی نے حملے کے بعد فوج کی سپریم کونسل کے اجلاس کی صدارت کرتےہوئے فوج کے اعلیٰ عہدیداروں کے ساتھ حملے کے ممکنہ اثرات سے متعلق ملاقات کی۔

داعش کے ابلاغی ادارے اعماق نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹیلی گرام پر حملے کی ذمہ داری قبول کرنے کا اعلان کیا۔ آزاد ذرائع سے اس بیان کی تصدیق نہیں ہو سکی مگر گروپ اس سے قبل بھی دہشت گرد کارروائیوں کی ذمہ داری قبول کرنے کے لئے انہی ذرائع کو استعمال کرتا رہا ہے۔

مصری فوج پر یہ حملہ سویز نہر کے کنارے پر موجود قنطارہ قصبے میں کیا گیا جو کہ اسماعیلیہ صوبے میں واقع ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں