.

امریکا: جیل سے فرار کے واقعے کا ڈراپ سین،’آئیڈیل افسر‘ کی خود کشی، قیدی گرفتار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

قتل کے مفرور ملزم اور الاباما پولیس افسر کی 11 روزہ تلاش پیر کو ملزم کی گرفتاری اور خود کو گولی مارنے کے بعد سابق افسر کی خودکشی کے ساتھ ختم ہو گئی۔

افسر رک سنگلٹن نے بتایا کہ دونوں افراد کو جنوبی انڈیانا میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ساتھ تیز رفتار تعاقب کے بعد گرفتار کیا گیا۔ حکام نے بتایا کہ قیدی کیسی کول وائٹ نے ہتھیار ڈال دیے، جب کہ وکی وائٹ جو لاؤڈرڈیل کاؤنٹی الاباما میں جیلوں کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر کے عہدے سے ریٹائر ہونے والی تھیں نے انڈیانا کی وینڈربرگ کاؤنٹی میں گولی مار دی۔ امریکی اخبار ’واشنگٹن پوسٹ‘ کے مطابق اُنہیں زخمی حالت میں اسپتال لے جایا گیا مگر وہ چند گھنٹوں کے بعد دم توڑ گئیں۔

کورونر اسٹیو لوکیر نے پیر کی رات کہا کہ وکی وائٹ کا شام 7 بجے کے فوراً بعد اسپتال میں انتقال ہوگیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ منگل کو پوسٹ مارٹم شیڈول ہے اور ان کا دفتر قانون نافذ کرنے والے حکام کے ساتھ موت کی تحقیقات کر رہا ہے۔

آفیسر سنگلٹن نے ایک نیوز کانفرنس میں کیسی وائٹ کے بارے میں کہا کہ "ہم نے آج ایک خطرناک آدمی کو گرفتار کیا ہے جو دوبارہ کبھی دن کی روشنی نہیں دیکھے گا۔"

دونوں کو غیر متعلق سمجھا جاتا ہے لیکن تفتیش کاروں کو یقین ہے کہ ان دونوں کے آپس میں رومانوی تعلقات تھے۔ یہ کہ وکی وائٹ نے اسے منصوبہ بند طریقے سے فرار ہونے میں مدد کی۔

29 اپریل کو وکی وائٹ نے الاباما کی ایک جیل سے قیدی کیسی وائٹ کو فرار ہونے میں مدد کی۔ دونوں کا خاندانی نام ایک ہی ہونے کے باوجود آپس میں کوئی تعلق نہیں ہے۔

مجرم کو فرار کرنے میں مدد کرنے والی خاتون کی ماں نے WAAY31 ٹی وی چینل کو بتایا کہ میری بیٹی نے کچھ نہیں کیا۔ میں شرط لگاتی ہوں کہ اسے تیزی رفتاری سے ڈرائیونگ پر کبھی کوئی نوٹس نہیں ملا۔

وکی وائٹ امریکا میں سب سے زیادہ مطلوب افراد میں سے ایک ہیں حالانکہ علاقے کے پولیس چیف نے اسے "ماڈل ملازم" کے طور پر بیان کیا اور ڈسٹرکٹ اٹارنی نے اسے "جیل کی سب سے زیادہ قابل اعتماد شخصیت قرار دیا اور کہا کہ اکثر قیدیوں کی دوسری جیلوں میں منتقلی اس کی نگرانی میں ہوتی تھی۔

جب وکی جمعہ کی صبح فلورنس جیل میں مجرم کو لینے آئی تو اس کا کہنا تھا کہ وہ اسے عدالت میں پیش کریں گی کیونکہ اس کی نفسیاتی تشخیص کرانی ہے۔ وہ اسے قریب ہی ایک شاپنگ مال میں کھڑی کار میں لے گئی۔ تب تک مجرم کو ہتھکڑیاں لگی ہوئی تھیں۔ وکی وائٹ نے یہ تاثر نہیں پیدا ہونے دیا کہ وہ مجرم کے فرار میں اس کی مدد کررہی ہے۔ یہ واقعہ مقامی وقت کے مطابق صبح نو بجے کا ہے۔

تاہم جیل کے نگرانی کرنے والے کیمروں کے ذریعے ریکارڈ کی گئی فوٹیج میں وکی وائٹ اور جیل اہلکار کے درمیان کسی قسم کے تعاون کی تصدیق نہیں ہوتی۔ جب وہ وکی کو لے جانے کے لیے آتی ہے تب بھی اس نے یہ محسوس نہیں ہونے دیا کہ دونوں کےدرمیان کوئی چکر چل رہا ہے۔ وہ اسے ہتھکڑیوں کے ساتھ صبح ساڑھے 9 بجے کے فوراً بعد فرار ہوگئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں