.

لبنان : حزب اللہ کی غنڈہ گردی جاری ، مخالف انتخابی شخصیت اور بیٹے پر حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنان کے شمال مشرق میں واقع البقاع میں تیسرے انتخابی حلقے میں انتخابی معرکے میں پھر سے دہشت کا عنصر واپس آ گیا ہے۔ اس حلقے کی دو اہم جماعتیں "الامل والوفاء" اور "بناء الدولہ" ہیں۔

تہران نواز لبنانی ملیشیا حزب اللہ اس وقت اپنی مخالف جماعت کی پوزیشن کمزور کرنے کے لیے سر توڑ کوشش میں مصروف ہے۔ ملیشیا نے "بناء الدولہ" میں شامل تین شیعہ امیدواروں کو اس حیلے کی بنیاد پر دست بردار ہونے پر مجبور کر دیا کہ یہ جماعت مشکوک ایجنڈوں پر کام کر رہی ہے۔ حزب اللہ نے اس مقصد کے لیے خوف و دہشت کا بھی استعمال کیا ہے۔ اس سلسلے میں "بناء الدولہ" جماعت کے سربراہ عباس الجوہری کے بیٹے کو اس کی یونیورسٹی کے سامنے دھمکایا بھی ہے۔

تفصیلات کے مطابق عباس الجوہری اور ان کے بیٹے کو بیروت میں لبنانی امریکی لبنانی یونیورسٹی کی عمارت کے باہر نوجوانوں کی جانب سے دھاوے کا نشانہ بنایا گیا۔ یہ واقعہ کل جمعرات کی سہ پہر پیش آیا۔ نوجوانوں کے ٹولے نے الجوہری کے سامنے کھڑے ہو کر حزب اللہ کے حق میں نعرے بازی بھی کی۔

اسی طرح بعلبک شہر میں بھی الجوہری کے گھر کے سامنے نوجوانوں نے الجوہری کے خلاف اور حزب اللہ کی حمایت میں نعرے لگائے۔ نوجوانوں نے حزب اللہ کے پرچم تھامے ہوئے تھے۔

عباس الجوہری نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ "حزب اللہ جو کچھ ان کی جماعت کے خلاف کر رہی ہے اس کا خود حزب اللہ پر ہی منفی اثر پڑے گا .. اس لیے کہ لوگ اس غنڈہ گردی اور اشتعال انگیزی کو مسترد کرتے ہیں"۔

الجوہری نے توقع ظاہر کی ہے کہ حزب اللہ کی جانب سے دہشت پھیلانے اور فرقہ واریت کا کارڈ کھیلنے کا سلسلہ آئندہ گھنٹوں میں بھی جاری رہے گا .. اس کی وجہ یہ ہے کہ شیعہ حلقے میں ان کی پوزیشن کافی کمزور ہو گئی ہے۔ الجوہری کے مطابق انہوں نے فوج سے مطالبہ کیا تھا کہ انہیں تحفظ فراہم کیا جائے تاہم فوج کچھ نہ کر سکی۔

یاد رہے کہ الجوہری پر دھاوا بولنے کا یہ پہلا واقعہ نہیں ہے۔ اس سے قبل وہ کئی ہفتوں سے انتخابی مہم کے دوران میں ہوائی فائرنگ کا سامنا کر چکے ہیں۔

البقاع کے تیسرے انتخابی حلقے میں چھ جماعتوں کے بیچ مقابلہ ہے۔ ان میں دو بنیادی جماعتیں "الامل والوفاء" اور "بناء الدولہ" ہے۔ پہلی جماعت کو حزب اللہ اور امل موومنٹ کی حمایت حاصل ہے جب کہ "بناء الدولہ" کو لبنانی فورسز پارٹی اور اپوزیشن کی شیعہ شخصیات کی سپورٹ حاصل ہے۔ ان شخصیات میں نمایاں ترین شیخ عباس الجوہری ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں