روس اور یوکرین

روس کی جوابی کارروائی، رومانیا کے 10 سفارت کار ملک بدر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

بخارسٹ کی جانب سے روسی سفیروں کو نکالے جانے کے جواب میں روس نے جمعہ کو ماسکو اور مغرب کے درمیان سفارتی جنگ کے ایک حصے کے طور پر رومانیا سے 10 سفارت کاروں کو بے دخل کر دیا۔

روسی وزارت خارجہ نے کہا کہ اس نے یوکرین میں مبینہ جنگی جرائم کا ذمہ دار ماسکو کو ٹھہرانے کی رومانیا کی کوششوں کو مسترد کر دیا ہے۔

رائیٹرزکے مطابق وزارت خارجہ نے ایک الگ بیان میں کہا کہ بلغاریہ کے سفارت خانے کے ایک ملازم کو بھی نکال دیا گیا ہے۔

10 روسی سفارت کاروں کی ملک بدری

گذشتہ اپریل کے آخر میں رومانیہ کی وزارت خارجہ نے دس روسی سفارت کاروں کو ملک بدر کرنے کا اعلان کیا تھا۔ رومانیہ کا کہنا تھا کہ روسی سفارت کاروں نے بین الاقوامی قوانین کے مطابق کام نہیں کیا۔

یہ اقدام یوکرین کے بوچا میں اجتماعی قبروں کی دریافت اور قصبے سے روسی فوجیوں کے انخلاء کے بعد شہریوں کے قتل کی خبروں پر پورے یورپی براعظم کے غم وغصے کا نتیجہ ہے۔

قابل ذکر ہے کہ یہ اقدامات یوکرین میں ماسکو کی فوجی مہم کے تناظر میں یورپی دارالحکومتوں سے 300 سے زیادہ روسی سفارت کاروں کو بے دخل کیا جا چکا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں