سعودی آرامکو کا 2022ء کی پہلی سہ ماہی میں 39.5 ارب ڈالر کے خالص منافع کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی آرامکو نے اتوار کے روزرواں سال کی پہلی سہ ماہی میں اپنی خالص آمدنی میں قریباً 82 فی صد اضافے کی اطلاع دی ہے۔اس کا یہ منافع تجزیہ کاروں کی پیشین گوئیوں کے عین مطابق ہے کیونکہ تیل کی مستحکم قیمتوں کی بدولت سعودی عرب کی ملکیتی دنیا کی سب سے بڑی تیل کمپنی کے خالص منافع میں اضافے میں مدد ملی ہے۔

آرامکواب دنیا کی سب سے امیرکمپنی بن چکی ہے اور اس نے گذشتہ ہفتے ہی امریکا کی ٹیکنالوجی کمپنی ایپل کو پچھاڑا ہے۔اس نے یکم جنوری سے 31 مارچ تک پہلی سہ ماہی میں 39.5 ارب ڈالر کی خالص آمدنی کی اطلاع دی ہے۔ایک سال قبل اسی مدت میں آرامکو کی خالص آمدن 21.7 ارب ڈالررہی تھی۔
کمپنی کے فراہم کردہ 12 تجزیہ کاروں کے تخمینے میں دنیا کی سرفہرست تیل برآمد کنندہ کمپنی کی خالص آمدنی 38.5 ارب ڈالررہنے کی پیشین گوئی کی گئی تھی۔

سعودی آرامکو کے چیف ایگزیکٹو آفیسر(سی ای او)امین الناصر نے کہا کہ عالمی منڈیوں میں بڑھتے ہوئے اتار چڑھاؤ کے پس منظر میں ہم دنیا میں توانائی کی طلب کو تیزی سے پوراکرنے میں مدد دینے پرتوجہ مرکوز کیے ہوئے ہیں اورقابل اعتماد، سستی اور پائیدارتوانائی مہیا کرنے پر توجہ دے رہے ہیں۔

انھوں نے مزید کہا کہ توانائی کی ضمانت انتہائی اہم ہے اور ہم طویل مدت کے لیے سرمایہ کاری کررہے ہیں جس سے تیل اورگیس کی پیداواری صلاحیت میں توسیع ہو رہی ہے تاکہ طلب میں متوقع نمو کو پورا کیا جا سکے۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ وہ صارفین کی حمایت اور مستقبل میں متبادل توانائی کے ذرائع میں منتقلی دونوں کے بارے میں پُرامید ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں