صنعاء کے ہوائی اڈے سے پہلا یمنی طیارہ اردن کے دارالحکومت عمّان روانہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

یمنی فضائی کمپنی کا طیارہ آج پیر کی صبح دارالحکومت صنعاء سے اردن کے دارالحکومت عمّان کے لیے روانہ ہوا۔ یہ انسانی بنیادوں پر اقوام متحدہ کے زیر سرپرستی جنگ بندی کے معاہدے کے تحت صنعاء سے روانہ ہونے والی پہلی پرواز ہے۔ مقامی وقت کے مطابق صبح 9 بجے اڑان بھرنے والے طیارے میں تقریبا 126 افراد سوار تھے۔ یہ وہ مریض ہیں جن کی حالت تشویش ناک ہے۔

یہ پیش رفت یمن کے لیے اقوام متحدہ کے ایلچی کی بھرپور کوششوں کے بعد سامنے آئی ہے۔ ان کوششوں کو یمن میں آئینی حکومت کے حامی عرب اتحاد کی سپورٹ حاصل رہی۔ علاوہ ازیں یمنی حکومت نے بڑے پیمانے پر سہولت کاری پیش کی تا کہ صنعاء کے ہوائی اڈے کو چلانے اور تجارتی پروازوں کو شروع کرنے کی راہ میں حوثی ملیشیا کی جانب سے کھڑی کی گئی رکاوٹوں کو دور کیا جا سکے۔

یمنی فضائی کمپنی کا طیارہ آج کسی وقت عمّان سے واپس صنعاء پہنچے گا۔

یمنی وزیر خارجہ احمد بن مبارک نے ہفتے کے روز اپنی ٹویٹ میں کہا تھا کہ صنعاء ہوائی اڈے سے پہلی پرواز کو ری شیڈول کرنے کے بعد اب یہ پیر کی صبح روانہ ہو گی۔ انہوں نے واضح کیا کہ پورے ملک میں یمنی شہریوں کے مسائل کو کم کرنا حکومت کی اولین ترجیح ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں