ایران میں پاسداران انقلاب کے سابق کمانڈر کی گرفتاری کا انکشاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

ایران میں حکام کے ہاتھوں پاسداران انقلاب کے ایک سابق کمانڈر کی گرفتاری کی خبر کے انکشاف کے بعد ایرانی حلقوں میں ہنگامہ مچ گیا۔ مذکورہ کمانڈر پر ایک صوتی ریکارڈنگ افشا کرنے کا الزام ہے۔ اس ریکارڈنگ نے پاسداران میں دیگر کمانڈروں کی بدعنوانی کے بے نقاب کر دیا۔

مقامی میڈیا نے پیر کی شام بتایا کہ محمد قائمی غیر واضح وجوہات کی بنا پر گذشتہ دو ماہ سے زیادہ عرصے سے گرفتار ہیں۔ ان کے لیے وکیل دفاع کا تعین بھی نہیں کیا گیا ہے۔ قائمی پاسداران انقلاب کے زیر انتظام یاس ہولڈنگ کارپوریشن کے سابق ڈائریکٹر ہیں۔

معلومات کے مطابق گرفتاری کی وجوہات موجود نہیں ہیں۔ اس اثنا میں یہ آوازیں بھی اٹھ رہی ہیں کہ حراست بنیادی طور پر ایک صوتی ریکارڈنگ افشا کیے جانے کے الزام کے تحت عمل میں آئی۔ اس ریکارڈنگ میں ایرانی پاسداران انقلاب کے کمانڈروں کی بدعنوانی کی تفصیل بتائی گئی ہے۔ مذکورہ صوتی ریکارڈنگ رواں سال فروری میں افشا ہو کر پھیل گئی تھی۔

قائمی ایرانی پاسداران انقلاب کے سابق کمانڈر ہیں۔ ان کی جانب سے مبینہ طور پر افشا ہونے والی صوتی ریکارڈنگ کا دورانیہ 50 ہے۔ اس میں پاسداران انقلاب کے سابق سربراہ میجر جنرل محمد علی جعفری کی جنرل صادق ذو القدر نیا کے ساتھ بات چیت شامل ہے۔ ذو القدر پاسداران انقلاب میں اقتصادی اور تعمیراتی امور کے نگراں ہیں۔

دونوں شخصیات کے درمیان بدعنوانی کا معاملہ زیر بحث آیا۔ اس بدعنوانی کا تعلق پاسداران انقلاب کی القدس فورس ، تہران بلدیہ کے سابق میئر اور موجود پارلیمنٹ کے اسپیکر محمد باقر قالیباف ، جنرل جمال الدین آبرو مند اور اور پاسداران انقلاب کی انٹیلی جنس کے سربراہ حسین طائب سے ہے۔

واضح رہے کہ یاس ہولڈنگ کارپوریشن خدمات ، بروکریج اور ہاؤسنگ کے شعبوں میں ایک متعلقہ کمپنی ہے۔ اس کمپنی کو شام میں القدس فورس کی سرگرمیوں کی سپورٹ اور بیرون ملک عسکری کارروائیوں کے ذمے داران کی مالی سپورٹ کے واسطے استعمال کیا گیا۔

ایرانی پاسداران انقلاب کے زیر انتظام فارس نیوز ایجنسی نے ایک سابقہ رپورٹ میں بتایا تھا کہ اس کمپنی کو قائم کرنے کا سبب یہ تھا کہ سابق صدر حسن روحانی کی حکومت زمین پر جنگجوؤں کی سپورٹ کی استعداد نہیں رکھتی تھی۔

سال 2017ء میں کمپنی کے بعض ایگزیکٹو عہدے داران کی بدعنوانی کے اسکینڈلوں کے پھیل جانے اور اس کے نتیجے میں ان کی گرفتاریوں کے بعد کمپنی کو تحلیل کرنے کا فیصلہ جاری کیا گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں