روس اور یوکرین

انٹونی بلینکن کا تین ماہ کے بعد کیف میں امریکی سفارت خانہ دوبارہ کھولنے کااعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

امریکا نے یوکرین کے دارالحکومت کیف میں تین ماہ کی بندش کے بعد بدھ کے روزاپنا سفارت خانہ دوبارہ کھول دیا ہے۔امریکا نے روس کے 24 فروری کو یوکرین پر حملے سے ہفتہ عشرہ قبل حفظ ماتقدم کے طور پراپنا سفارت خانہ بند کردیا تھا۔

امریکی وزیرخارجہ انٹونی بلینکن نے سفارت خانہ دوبارہ کھولنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’’آج ہم باضابطہ طور پر کیف میں سفارتی سرگرمیاں دوبارہ شروع کررہے ہیں‘‘۔

انھوں نے ایک بیان میں کہا کہ ’’یوکرینی عوام نے ہماری سکیورٹی امداد بدولت روس کے بلاجواز حملے کے جواب میں اپنے وطن کا دفاع کیا ہے اور اس کے نتیجے میں ستارے اور پٹیاں (امریکی پرچم)ایک بار پھر سفارت خانے کے اوپر لہرا رہی ہیں‘‘۔

انھوں نے بتایا کہ امریکا نے یوکرین کے دارالحکومت میں واپس آنے والے سفارت کاروں کے تحفظ کے لیے ’’اضافی اقدامات‘‘ کیے ہیں۔

اس بات کا اعتراف کرتے ہوئے کہ جنگ ابھی ختم نہیں ہوئی، بلینکن نے کہا کہ امریکا یوکرین کے عوام اورحکومت کے ساتھ اپنےعزم کا اعادہ کررہا ہے۔ہم ان کے ساتھ فخر سے کھڑے ہیں اوران کی حمایت جاری رکھے ہوئے ہیں کیونکہ وہ کریملن کی وحشیانہ جارحانہ جنگ کے مقابلے میں اپنے ملک کا دفاع کررہے ہیں۔

کیف میں آج سفارت خانے پرامریکی پرچم لہرادیا گیا ہے۔اس سے کچھ دیر قبل سفارت خانے کے ترجمان ڈینیل لینگن کیمپ نے صحافیوں بتایا کہ ہم باضابطہ طور پرمشن کی سرگرمیاں دوبارہ شروع کررہے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ سفارتی عملہ کی تھوڑی تعداد ابتدائی طور پرفرائض منصبی انجام دینے کے لیے مشن میں واپس آئے گی۔لینگن کیمپ نے واضح کیا کہ سفارت خانے میں قونصلر سرگرمیاں فوری طور پر دوبارہ شروع نہیں ہوں گی اورمحکمہ خارجہ کی جانب سے یوکرین بھرکے لیے کوئی سفری ہدایت (ایڈوائزری) بھی جاری نہیں کی گئی ہے۔

کیف میں ایک یوکرینی خاتون بند امریکی سفارت خانے کے نزدیک سے گزررہی ہیں۔ فائل تصویر15فروری 2022 ۔
کیف میں ایک یوکرینی خاتون بند امریکی سفارت خانے کے نزدیک سے گزررہی ہیں۔ فائل تصویر15فروری 2022 ۔

واضح رہے کہ کیف میں امریکی سفارت خانہ روس کے مکمل حملے سے دس روز قبل 14 فروری کو بند کر دیا گیا تھا۔ امریکا کے سفارتی عملہ نے جنگ چھڑنے کے بعد پہلے دو ماہ پولینڈ میں گزارے لیکن سفارت خانہ کی ناظم الامور کرسٹینا کوین 2 مئی کو مغربی شہر لفیف سے ہوتے ہوئے یوکرین واپس آ گئی تھیں۔

گذشتہ ایک ماہ کے دوران میں فرانس، جرمنی اور برطانیہ سمیت بہت سے مغربی ممالک نے کیف میں اپنے سفارت خانے دوبارہ کھول دیے ہیں کیونکہ روسی فوج یوکرین کے شمال سے واپس نکل کر ملک کے مشرقی حصے میں اپنی جارحانہ جنگ پر توجہ مرکوز کررہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں