میرے والد کا چھینا حق واپس مل گیا ہے: جمال مبارک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سنہ 2011 میں عوامی احتجاج کے بعد اقتدار سے رخصت ہونے والے سابق مصری صدرحسنی مُبارک کے بیٹے جمال مبارک کی پہلی ویڈیو سامنے آئی ہے۔ اس میں انہوں نے مبارک خاندان کی دولت پر یورپی عدالتوں کے ساتھ اپنے خاندان کی قانونی جنگ کی تفصیلات کا انکشاف کیا۔

جمال مبارک نے ایک پریس بیان میں جسے ویڈیو کے ذریعے پڑھا گیا میں کہا کہ "یورپی یونین کی جنرل کورٹ کے حالیہ فیصلے کے بعد مبارک خاندان کی دہائیوں پر محیط قانونی جنگ ختم ہو گئی ہے۔ کونسل نے تسلیم کیا ہے کہ مبارک خاندان کے اثاثوں پر پابندیاں شروع سےغیرقانونی تھیں۔

مجرمانہ تفتیش کا خاتمہ

انہوں نے مزید کہا کہ "سوئس فیڈرل پراسیکیوٹر آفس کی جانب سے علاء اور جمال مبارک کو مکمل طور پر بری کرنے کے فیصلے کے بعد 11 سال تک جاری رہنے والی مجرمانہ تحقیقات کا خاتمہ ہوگیا ہے۔ سب پر واضح ہو گیا ہےکہ خاندان کے حقوق کی خلاف ورزی کی گئی ہے۔

انہوں نے کہا کہ میرے خاندان نے فیصلہ کیا ہے کہ ہم مسلسل ہتک آمیز رپورٹس کے سامنے مزید خاموش نہیں رہ سکتے اور اب وقت آگیا ہے کہ خاندان براہ راست جواب دے۔"

انہوں نے وضاحت کی کہ دس سال سے زائد عرصے تک جاری رہنے والے اقدامات اب ختم ہو چکے ہیں۔ ہمیں مکمل طور پر بری کر دیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں