یمن کی الحدیدہ بندرگاہ کے نزدیک ہانگ کانگ کے پرچم بردار جہاز پرحملے کی کوشش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ہانگ کانگ کے پرچم بردار جہاز پر جمعرات کو یمن کی ساحلی حدود میں حملے کی کوشش کی گئی ہے لیکن فوری طورپر واقعہ کے حالات واضح نہیں ہیں۔

برطانیہ کے میری ٹائم ٹریڈ آپریشنز گروپ نے کہا ہے کہ یہ حملہ یمن کی الحدیدہ بندرگاہ کے قریب کیا گیا ہے۔اس واقعے کی تحقیقات جاری ہیں لیکن اس نے مزید کوئی تفصیل نہیں بتائی۔الحدیدہ کی بندرگاہ پر ایران کے حمایت یافتہ حوثیوں کا قبضہ ہے اور وہ اس سے پہلے متعدد بحری جہازوں پر حملے کرچکے ہیں۔

میری ٹائم انٹیلی جنس فرم ڈریاڈ گلوبل نے ایسوسی ایٹڈ پریس(اے پی) کوبتایا کہ حملے کی زد میں آنے والا چھوٹا جہازلاکوٹا تھاجو 62 فٹ (19 میٹر) طویل تھااور اس پرہانگ کانگ کاپرچم لہرا رہا تھا۔

ڈریاڈ نے بتایا کہ جہازمیں سوارافراد بین الاقوامی پانیوں میں سفرکررہے تھے اور مبیّنہ طور پر محفوظ تھے۔فوری طورپریہ واضح نہیں ہوسکا کہ جہاز کا مالک کون تھا یا واقعے کے وقت اس پر کل کتنے افرادسوار تھے۔

جہازرانی کے سیٹلائٹ ڈیٹا کے مطابق لاکوٹا جہاز بحیرہ احمرمیں ہانیش جزائر کے مغرب میں براعظم افریقا میں واقع اریٹیریا اور جزیرہ نماعرب ملک یمن کے درمیان سفرکررہا تھا۔یہ جہاز یمن کی ساحل حدود کے قریب سفر کرنے سے پہلے جیبوتی میں تھا۔

جہاز نے اپنا خودکارشناختی نظام بھی آن نہیں کیا تھا جسے ڈریاڈ نے ’’بہت عجیب‘‘قرار دیا ہے کیونکہ بحیرہ احمر بین الاقوامی جہاز رانی کا ایک بڑا راستہ ہے۔ڈریاڈ نے کہا کہ اس پر سوار ہونے کی کئی کوششیں کی گئی ہیں اور اطلاعات سے پتا چلتا ہے کہ وہ وہاں سے نکل جانے میں کامیاب ہو گیا ہے۔

امریکی بحریہ کے مشرقِ اوسط میں قائم پانچویں بحری بیڑے نے کہا ہے کہ وہ اس حملے سے آگاہ ہے۔تاہم اس نے فوری طور پر مزید تبصرہ کرنے سے انکار کردیا۔

واضح رہے کہ جنوری میں حوثیوں نے متحدہ عرب امارات کے جھنڈے والے جہاز روابی پر قبضہ کرلیا تھا۔حوثیوں اور عرب اتحاد کے درمیان رمضان المبارک میں جنگ بندی کے بعد جہاز کے ہندوستانی عملہ کو گذشتہ ماہ رہا کردیا گیا تھا۔یمن میں ہنوز جنگ بندی جاری ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں