عراق: طلبا کے سامنے کبوتر کا سرتن سے جدا کرنے کے واقعے پر شدید غم وغصہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عراق میں ایک کالج میں مقامی طالب علم کی جانب سے اپنے ہاتھ سے بے زبان کبوتر کا سر مروڑ کر اسے تن سے جدا کرنے کے واقعے اور اس کی ویڈیو بنانے پر عوامی حلقوں اور جانداروں کے حقوق کے لیے کام کرنے والے کارکنوں کی طرف سے شدید غم وغصے کا اظہار کیا جا رہا ہے۔

بے رحم لڑکے نے ایک کبوتر پکڑا اور اسے کالج کے صحن میں دوسرے طلبا کے سامنے بے زبان کبوتر کی گردن مروڑ دی بلکہ تکبر کا مظاہرہ کرتے ہوئے اسے شرمناک واقعے کی ویڈیو بھی بنوائی گئی۔

ویڈیو شیئرنگ ویب سائٹ ’یوٹیوب‘ پراس ویڈیو کے سامنے آنے کے بعد سماجی اور عوامی حلقوں میں اس واقعے پر شدید برہمی کا اظہار کیا جا رہا ہے۔ ناقدین کا کہنا ہے کہ اس طرح کے غیراخلاقی رویے اور جنونیت کسی صورت میں قابل قبول نہیں۔ بے زبان جانداروں کو اس طرح بے رحمی سے مارنا پرلے درجے کی غیراخلاقی حرکت ہے۔

کالج کی طرف سے طالب علم کی سرزنش

کالج کے ڈین نے اس رویے کی وضاحت کے لیے اس طالب علم کو اسٹوڈنٹ ڈسپلن کونسل سے رجوع کرنے کو کہا جس کے بعد طالب علم کی اس ی ہدایت کی، جسے میڈیا نے عوامی اقدار اور اخلاقیات سے متصادم اخلاقی زوال سے پیدا ہونے والا غیر انسانی رویہ قرار دیا۔ اس ہنگامہ آرائی کے بعد طالب علم نے ایک اور ویڈیو ریکارڈ کی، جس میں اس نے کبوترکے بیمار ہونے کی دلیل دیتے ہوئے اس رویے کے لیے معافی مانگی۔

میڈیا کارکنوں نے ایسے گھناؤنے مناظر کے پھیلاؤ کے خلاف خبردار کرتے ہوئے اسے اخلاقی "تباہی" کی بدترین مثال قرار دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں