تبوک میں سالانہ 37 ہزار ٹن "میوہ جات" کی پیداوار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

سعودی عرب کے علاقے تبوک میں گری دار خشک میووں اور موسمی پھلوں کے 1,448,000 سے زیادہ درخت ہیں جن سے سالانہ 37,000 ٹن پھل حاصل کیے جاتے ہیں۔ ان پھلوں میں خوبانی، آڑو اور نیکٹیرین پیدا کرنے کے لیے دنیا کے جدید ترین آبپاشی طریقوں پر انحصار کیا جاتا ہے اور ان پھلوں کی درجہ بندی بادام کے خاندان سے کی جاتی ہے۔

سعودی پریس ایجنسی "ایس پی اے" کے مطابق بادام کے درختوں نے تبوک کے علاقے میں اپنا راستہ ہمسایہ خطوں کے کسانوں کے سابقہ تجربات اور وزارت ماحولیات، پانی اور زراعت کی طرف سے کسانوں کو جدید طریقوں کی طرف رہنمائی کے لیے کی جانے والی کوششوں کے ذریعے بنایا۔ اس مقصد کے لیے حکومت نے صحیح سائنسی طریقوں سے کیڑے مار ادویات اور کھادوں کے استعمال پر عمل کیا جس سے اس علاقے میں میوہ جات کے معیار اور پیداوار پر مثبت اثرات مرتب ہوئے۔

تبوک کے میوہ جات
تبوک کے میوہ جات

تبوک میں کسانوں کی زرعی رہ نمائی کے لیے سیمینارز، تربیتی کورسز، لیکچرز اور ورکشاپس کا انعقاد کیا جاتا ہے جس نے کسانوں کو مہارت اور تجربات کی منتقلی میں اہم کردار ادا کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں