خلیج جنگ کے بارے میں سعودی فلم جلد نمائش کے پیش کی جائے گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

خلیجی جنگ کے دوران لوگوں کی کہانیوں اور اس مرحلے کی تفصیلات پر مشتمل فلم آئندہ ماہ سعودی فلم فیسٹیول میں نمائش کے لیے پیش کی جائے گی ’من ذاکرۃ الشمال‘ کے عنوان سے تیار کی گئی فلم کے ہدایت کار عبدالمحسن المطیری ہیں۔

اس فلم میں خلیجی جنگ کے دوران 1990-1991 کے درمیانی عرصے میں سماجی زاویوں سے تقریباً 10 مختلف کہانیوں کا جائزہ لیا گیا ہے اور مختلف نقطہ نظر سے سعودی عرب کے اندر جنگ کی یادوں پر توجہ مرکوز کی گئی ہے کیونکہ خلیجی جنگ ان اہم موضوعات میں سے ایک ہے جس نے ڈرامائی اور سینما دونوں پر مناسب طریقے سے توجہ نہیں دی گئی۔

فلم کی کہانی

ہدایت کار عبدالمحسن المطیری نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ فلم میموری آف دی نارتھ ایک دستاویزی فلم ہے جو خلیج کے بحران کے دوران ماضی میں ہماری یادوں کے دوران پیش آنے والے حالات سے لے کر مختلف مقامی سماجی کہانیوں کا جائزہ پیش کرتی ہے۔ اس میں مزاحیہ، افسوسناک پہلوؤں کے ساتھ ساتھ جو چیز اس فلم کو ممتاز کرتی ہے وہ یہ ہے کہ اس میں سعودی عرب کے کئی خطوں کی کہانیاں شامل ہیں جن میں ماضی کی اچھی نسلوں کے بارے میں بتایا گیا ہے۔

اُنہوں نے بتایا کہ فلم کا دورانیہ 45 منٹ ہے اور اسے آئندہ جون کے شروع میں اور دو اگست کو سعودی فلم فیسٹیول میں دکھایا جائے گا۔ فلم میں کلپس اور تصاویر دکھائی جائیں گی۔ اس فلم میں پہلی بار تقریباً 15 مہمانوں نے اپنی یاداشتیں بیان کی ہیں۔ ان کے بیان کردہ واقعات میں خلیجی بحران کے دوران کے واقعات کو شامل کیا گیا۔ یہ فلم شو میڈیا اور فائیو کلرز نے پروڈیوس کی ہے، جس کی ہدایت کاری عبدالمحسن المطیری نے کی اور سلطان العید اور طارق الرویلی نے پروڈیوسر کے طور پر کام کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں