ہائے رے مہنگائی، صدی پرانے مقبول آرٹ میگزین کی اشاعت بھی بند

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

کمر توڑ مہنگائی کے تباہ کن اثرات ہر شعبہ زندگی پر مرتب ہو رہے ہیں۔ مصرمیں 90 سال سے شائع ہونے والے ایک مقبول شوبز میگزین کی انتظامیہ بھی مہنگائی سے تنگ آکر میگزین کی اشاعت روکنے پرمجبور ہوگئی ہے۔

مصرسے باقاعدگی کے ساتھ شائع ہونے والے ہفتہ وار’کواکب‘میگزین کی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ یہ میگزین نوے سال پہلے جاری کیا گیا اور اس کے بعد یہ مسلسل شائع ہوتا رہا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ اب ہم پرنٹنگ پریس کے بگڑتے حالات اور پرنٹنگ کے زیادہ اخراجات کی وجہ سے مصر کا قدیم ترین آرٹ میگزین بند کر رہے ہیں۔ یہ میگزین فن کے ستاروں کے لیے ایک بڑا خواب تھا جو اب ختم ہوجائے گا۔

جمعرات کومصرمیں نیشنل پریس اتھارٹی نے فیصلہ کیا کہ 1932 میں قائم ہونے والے میگزین "الکواکب" کی اشاعت روک دی جائے اور اسے’حوا‘ میگزین کے "یور ڈاکٹر" میگزین کے ساتھ ضم کر دیا جائے ۔ ’حوا‘ میگزین"دار الہلال" فاؤنڈیشن کے تحت شائع ہوتا ہے اور اس کے ہر ایڈیشن کو آن لائن شائع کیا جاتا ہے۔

’الکواکب‘ میگزین ایک ہفتہ وار ٹیکنیکل میگزین ہے، جس کا پہلا شمارہ 28 مارچ 1932 کو شائع ہوا تھا۔ جب اسے جاری کیا گیا تو اس میں ہفتہ کی فلموں کے خلاصے، ستاروں کے ساتھ گفتگو، سینما نگاروں کے مضامین کے علاوہ فلموں کی خبریں اور ستاروں کےانٹرویوشامل ہوتے تھے۔

یہ میگزین لبنانی صحافی جارج زیدان نےجاری کیا تھا جو دار الہلال کے بانی تھے۔ ان کے بعد ان کے دو بیٹے امیل اور شکری جریدے کی اشاعتوں کی نگرانی کر رہے تھے۔ فہیم نجیب، مجدی فہمی،رجا النقاش، راجی عنایت، حسن امام عمر، کمال النجمی، حسن شاہ اور محمود سعد اس کی ادارتی ٹیم میں شامل رہے۔

میگزین نے نوجوان فن کاروں کی صلاحیتوں کو فروغ دینے اور نوآموز فن کاروں کی شہرت کے لیے دروازے کھولے اور شوبز سے جڑے مسائل کو اجاگر کرنے کی موثر کوشش کی۔

میگزین نے اپنی پوری تاریخ میں جن مسائل کو اٹھایا ہے۔ اس میگزین میں مشہور فن کار مرحوم زکی تعلیمات کی جانب سے شوبز کی تعلیم کے لیے ایک انسٹیٹیوٹ کےقیام اور اس کے لیے ہونے والی جدو جہد پر بھی روشنی ڈالی۔

اس انسٹی ٹیوٹ سے فارغ التحصیل ہونے والی فن کار زوزو حمدی الحکیم پہلی خاتون ہیں جنہیں الکواکب کے سرورق پر جگہ ملی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں