ایرانی پاسداران انقلاب کا’صہیونیوں‘پرکرنل خدائی کو قتل کرنے کا الزام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران کی سپاہِ پاسداران انقلاب کے سربراہ نے پیر کے روز’’صہیونیوں‘‘پر رواں ماہ کے اوائل میں تہران میں ایک کرنل کو قتل کرنے کا الزام عاید کیا ہے۔

میجرجنرل حسین سلامی نے بیان میں کہا ہے کہ پاسداران انقللاب کے کرنل حسن صیاد خدائی کوسفاک ترین لوگوں،صہیونیوں نے قتل کرایا اوراللہ نے چاہا تو ہم ان کی موت کا بدلہ لیں گے۔

تاہم انھوں نے’’صہیونی نظام‘‘ کی اصطلاح استعمال نہیں کی جسے ایران کے حکام باقاعدگی سے اسرائیل کے براہ راست حوالے کے طور پر استعمال کرتے رہتے ہیں۔

ایرانی حکام نے قبل ازیں بھی کرنل کے قتل کا الزام اسرائیل پرعاید کیاہے۔یہ کہا جاتاہے کہ انھیں اسرائیل کی جانب سے دنیا بھرمیں اپنے شہریوں کے خلاف حملوں کی منصوبہ بندی کے الزام میں نشانہ بنایا گیاتھا۔

تہران میں کرنل حسن خدائی کی کارپرموٹرسائیکل پرسوار دوحملہ آوروں نے فائرنگ کی تھی۔انھیں پانچ گولیاں لگی تھیں اور وہ موقع پر ہی دم توڑ گئے تھے۔اس واقعے میں ایران میں ہونے والی گذشتہ ہلاکتوں کی بازگشت بھی سنائی دی ہے۔ماضی میں اسی اندازمیں ایران کے جوہری سائنس دانوں کونشانہ بنایا گیا تھا اور ایران نے اسرائیل کی بدنام زمانہ خفیہ ایجنسی موساد پران کی ہلاکتوں کے الزامات عاید کیے تھے۔

ایران کی نیم سرکاری خبررساں ایجنسی ایسنا نے گذشتہ ہفتے بتایا تھا کہ تہران میں فائرنگ کے فوراً بعدپاسداران انقلاب نے اسرائیلی انٹیلی جنس سروس کے نیٹ ورک کے ارکان کا سراغ لگا کرانھیں گرفتارکرلیا ہے۔تاہم اسرائیلی خفیہ ایجنسی موساد کے نگران وزیراعظم نفتالی بینیٹ کے دفتر نے اس قتل پر ابھی تک کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں