برطانوی وزیر اعظم کو ‘پارٹی گیٹ’ پر تحریک عدم اعتماد کا سامنا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن کو حکمران جماعت کے ارکان پارلیمنٹ کی طرف سے عدم اعتماد کی تحریک کا سامنا ہے۔

برطانوی کمیٹی کے چئیرمین گراہم بریڈی نے کنزرویٹو جماعت کے ارکان کو لکھے جانے والے خط میں بتایا کہ “عدم اعتماد کے لئے ضروری 15 فی صد ارکان کی حمایت حاصل ہو چکی ہے۔

خط میں مزید بتایا گیا تھا کہ پیر 6 جون کو شام 6 بجے اور 8 بجے کے درمیان ووٹنگ کا انعقاد کیا جائے گا جس کی فورا گنتی کر کے عدم اعتماد کا نتیجہ بتایا جائے گا۔

برطانوی وزیر اعظم بورس کے ایک ترجمان نے اپنے بیان میں کہا کہ آج ایک ایسا موقع ہے کہ جس سے حکومت کو مہینوں کی غیر ضروری بحث ختم ہو سکے گی اور ہمیں آگے بڑھنے کا موقع ملے گا۔

بیان میں مزید کہا گیا کہ “برطانوی وزیر اعظم ممبران پارلیمنٹ کے سامنے اپنا مدعا بیان کرنے کے اس موقع کا خیر مقدم کرتے ہیں اور انہیں یہ یاد کروائیں گے کہ وہ برطانیہ کے عوام کے مسائل کے حل کے لئے یکجا ہیں۔”

برطانوی قوانین کے مطابق کم از کم 54 کنزرویٹو اراکین کے مطالبے پر ہی آئینی کمیٹی گراہم بریڈی کی سربراہی میں وزیر اعظم کے خلاف عدم اعتماد کی کارروائی شروع کر سکتی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں