سعودی عرب کی افغانستان انسانی ٹرسٹ فنڈ کے لیے تین کروڑ ڈالر کی امداد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب نے افغانستان ہیومینٹیرین ٹرسٹ فنڈ کی معاونت کے لیے تین کروڑ ڈالرمالیت کی گرانٹ مہیا کی ہے۔

افغانستان کا یہ انسانی ٹرسٹ فنڈ اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کے ساتھ مل کر اسلامی ترقیاتی بینک کی نگرانی میں کام کرتا ہے۔اس کو دی گئی گرانٹ سعودی عرب کی جانب سے برادرممالک کوانسانی اور امدادی کوششوں کے ضمن میں دی جانے والی امداد کا حصہ ہے۔

سعودی پریس ایجنسی کے مطابق اس مالی امداد کا مقصد افغانستان کے عوام کے مصائب کو کم کرنے، انسانی صورت حال کو مزید ابترہونے سے بچانے اور کسی بھی ممکنہ معاشی تباہی کوروکنے میں معاونت مہیاکرنا ہے کیونکہ اگر افغانستان معاشی طور پردیوالیہ ہوتا ہے تویہ ایک ایسا دھڑن تختہ ہوگا جو ممکنہ طور پرعلاقائی اور بین الاقوامی استحکام اور امن پر اثرانداز ہوسکتا ہے۔

ایس پی اے کے مطابق گذشتہ دہائیوں کے دوران میں افغانستان میں انسانی بھلائی، صحت کی دیکھ بھال ، تعلیمی اور غذائی تحفظ کے منصوبوں کے لیے سعودی عرب کی جانب سے مہیا کردہ کل امدادی رقم ایک ارب ریال ( 266۰5ملین ڈالر) سے تجاوزکر گئی ہے۔

افغانستان کے بارے میں او آئی سی کے ایلچی طارق علی بخت نے العربیہ کو بتایا کہ سعودی عرب نے افغانستان کواب تک کسی بھی دوسرے ملک کے مقابلے میں سب سے زیادہ امداد مہیا کی ہے۔

انھوں نے مزید کہا کہ اسلامی تعاون تنظیم انسانی منصوبوں خصوصاً صحت کی دیکھ بھال اور تعلیم کے منصوبوں پرعمل درآمد کے لیے افغانستان میں اپنے دفتر کے ذریعے اسلامی ترقیاتی بینک کے ساتھ مل کر کام کرے گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں