سعودی ڈیزائنر کی تیارکردہ برطانوی شاہی پوشاک میں کشمیری ’ٹچ‘ کے چرچے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

چند روز قبل ملکہ الزبتھ کے طویل ترین اقتدار کی پلاٹینم جوبلی کے شہزادہ چارلز کی اہلیہ کیملا ڈچز آف کارن وال نے سعودی ڈیزائنر یحییٰ البشری کی ڈیزاین کردہ ’پوشاک‘ زیب تن کر رکھی تھی۔ اس لباس کی وجہ سے انہیں محفل میں موجود مہمانوں کی طرف سے غیر معمولی توجہ حاصل رہی۔ یہ چغہ انہوں نے 25 سال قبل اپنے شوہر شہزادہ چارلس کو تحفے میں دیا تھا۔

’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کو دیے گئے اپنے انٹرویو میں البشری نے انکشاف کیا کہ شہزادہ چارلز کے دورہ سعودی عرب کے دوران انہیں سعودی ورثے سے متاثر ایک لباس تیار کر کے برطانوی ولی عہد کے وارث کو پیش کرنے کا کام سونپا گیا۔ میں نے فوری طور پر ان کے لیے’دقلہ‘ کا انتخاب کیا۔ ’دقلہ‘ ایک پوشاک ہے جس پر شہزادے کے شایان شان کام کرنا تھا جسے آگے چل کر شہزادہ چارلز کو شاہی تقریبات میں زیب تن کرنا تھا۔

یحیٰ اور شہزادہ چارلز
یحیٰ اور شہزادہ چارلز

انہوں نے مزید کہا کہ انگریز خوش لباس لوگ ہیں اور اپنے ملبوسات کے خوبصورت انتخاب میں حساس ہوتے ہیں۔ شاہی خاندان کی تو بات ہی الگ ہے۔ شاہی خاندان کے لوگ بہترین مواد کے خواہش مند ہوتے ہیں۔

پوشاک میں کشمیری دھاگے کا استعمال

البشری کا کہنا ہے کہ ’دقلہ‘ کی تیاری میں ہلکے نیلے رنگ کا کشمیری دھاگہ استعمال کیا گیا۔ اس پر سعودی ورثے کے نوشتہ جات کی کڑھائی کی گئی اور انہیں چاندی سے مزین کیا گیا۔ اس پوشاک کو ڈیزائن اور پہناوے کے لئے تیار کرنے ڈیڑھ ماہ کا عرصہ لگا۔

سعودی ڈیزائنر کی کوشش تھی کہ وہ شہزادہ چارلز کے لیے ایسی پوشاک تیار کریں جو ہر شاہی تقریب میں ان کے لیے موزوں رہے۔ یہی وجہ ہےکہ انہوں نے شہزادہ چارلز کے لیے اس کا انتخاب کیا۔

شہزادہ چارلز ابھا میں شہزادہ خالد الفیصل کے ساتھ تھے۔ اس وقت برطانوی شہزادے نے اس فن پارے کو دیکھا تو حیران رہ گئے۔

عربی اور اسلامی نقوش

سعودی ڈیزائنر البشری نے مزید کہا کہ"چارلز کو عربی اور اسلامی تحریروں میں دلچسپی ہے۔ اس لیے جب انہوں نے تحفہ دیکھا تو ان کا ردعمل بہت خوبصورت تھا۔ وہ اس عرصے کے بعد حیران رہ گئے جیسے لوگ اس وقت حیران رہ گئے جب ڈچز نے اسے برطانیہ میں سب سے اہم اجتماع کے سامنے پہنا تھا۔

متوازی طور پر سعودی ڈیزائنر کا خیال ہے کہ شہزادے نے ان سالوں کے دوران اس پوشاک کو اپنے پاس رکھا ہے جس سے پتا چلتا ہے کہ اس پوشاک میں کیملا ڈچز آف کارن وال اور شہزادہ چارلز دونوں کی دلچسپی رہی۔

البشری نے مغربی اخبارات کی جانب سے اس منظر کو مخصوص اور قابل ذکر قرار دینے کے بعد مسرت کا اظہار کیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ "مجھے اپنے کیرئیر کے دوران بادشاہوں اور شہزادوں کا ڈیزائنر کہا جاتا تھا۔ وہ سویڈن اور اردن کے بادشاہوں کے ساتھ ساتھ سعودی شاہی خاندان اور سابق سعودی فرمانروا شاہ عبداللہ کے ملبوسات بھی ڈیزائن کر چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں