سفاک باپ نے بیمار بیٹے کو گھر کی چھت پر زنجیروں میں جکڑ دیا

مصر میں پیش آنے والے اس واقعے پرعوام میں شدید غم وغصہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مصرسے آئے روز گھریلو تشدد، لڑائی جھگڑوں، طلاق ، خواتین اور بچوں پر تشدد کی خبریں آتی رہتی ہیں۔ ایسی ہی ایک تازہ خبر نے ایک بار پھر مصری عوام کو ہلا کر رکھ دیا ہے۔

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ایک ویڈیو دیکھ کر شہری حیران رہ گئے جب انہیں پتا چلا کہ ایک مصری شخص نے اپنے ہی ذہنی بیماربچے کو مکان کی چھت پر آہنی زنجیروں میں جکڑ رکھا ہے۔ پولیس نے اپنے تیرہ سالہ بچے کے پر ظلم پر اسے گرفتار کر لیا ہے۔

پولیس کواس واقعے کی اطلاع جیزا گورنری کی ایک خاتون جوبچے کی ماں ہے نے دی۔ اس خاتون کی اس شخص سے اب علاحدگی ہوچکی ہے۔ اس نے پولیس کو بتایا کہ میرے سابقہ شوہر نے میرے بچے کو اس کے والد نے گھر کی چھت پر زنجیروں سے باندھ رکھا ہے۔

دوسری طرف پولیس کا کہنا ہے کہ انہوں نے فوری کارروائی کر کے بچے کو بازیاب کرلیا اور اس کے والد کو گرفتار کر لیا ہے۔

پولیس کو بیان دیتے ہوئے ملزم نے بتایا کہ اس نے ایک دوسری خاتون سے شادی کر رکھی ہے۔ بیوی بھی کسی عزیز سے ملنے دوسرے شہر گئی تھی اور مجھے بھی ڈیوٹی پر جانا تھا۔ ذہنی مریض بچہ گھر میں اکیلا تھا۔ اگر سے گھر میں کھلا چھوڑا جاتا تو وہ گم ہوجاتا۔ اس لیے جاتے ہوئے اسے زنجیروں سے باندھ گیا تھا۔

تاہم پولیس نے اس شخص کے خلاف قانونی کارروائی شروع کر دی ہے اور مزید تحقیقات کے لیے اسے جیل بھیج دیا ہے۔

قابل ذکر ہے کہ مصری قانون تعزیرات کی دفعات 240 اور 241 میں مار پیٹ کی سزا 3 سال سے پانچ سال تک ہے۔ اگر کوئی بار بار بچوں پر تشدد کا مرتکب ہوتا ہے کہ تو اس پرتین سے دس سال قید با مشقت کی سزا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں