روس اور یوکرین

یوکرینی صدر نے روسی حملے کی امریکی وارننگ پر کان نہیں دھرے: جو بائیڈن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکی صدر جو بائیڈن کا کہنا ہے کہ یوکرین کے صدر ولودیمیر زیلنسکی نے امریکا کی جانب سے روس کی پیش قدمی کی تمام وارننگ کو نظر انداز کیا جس کی وجہ سے وہ 24 فروری کو حملے کے موقع پر تیار نہیں تھے۔

امریکی صدر نے لاس اینجلس میں سیاسی فنڈ ریزنگ کے لئے منعقدہ تقریب سے خطاب میں کہا کہ "مجھے معلوم ہے کہ حملے سے قبل بہت سے لوگوں کو لگ رہا تھا کہ میں روس کے بارے میں غلط سوچ رہا تھا مگر ہمارے پاس موجود معلومات اس سے برعکس تھی۔ زیلنسکی اور ان سمیت کئی لوگ یہ بات سننا پسند نہیں کر رہے تھے۔"

امریکی صدر نے روسی صدر ولادیمیر پوتن پر الزام لگایا کہ وہ یوکرین پر جنگ کے دوران یوکرینی قوم کے علاوہ یوکرینی کلچر کو بھی تباہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ روسی رہنما کیف کو روس کی ملکیت کے طور پر دیکھتے ہیں۔

روسی فورسز ابھی تک یوکرین کے دورالحکومت تک نہیں پہنچ سکی ہیں مگر انہوں نے یوکرین کے جنوب اور مشرق میں بہت سے مقامات پر پیش قدمی کی ہے۔ پوتن اور روسی حکومت کو امید ہے کہ وہ جلد دونباس کے خطے پر قبضے میں کامیاب رہیں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں