یمن میں بلی، بلے کی شادی، نکاح خواں نے باقاعدہ نکاح پڑھایا

واقعے پرعوامی اور مذہبی حلقوں کا شدید رد عمل، نکاح خواں کے خلاف کارروئی کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمن سے آج کل زیادہ تر خبریں جنگ سے متعلق ہوتی ہیں مگر جنگ زدہ ملک میں بعض ایسے واقعات بھی خبر بن رہے ہیں جنہیں سن کرلوگ حیران رہ جاتے ہیں۔

ایک ایسی ہی حیران کردینے والی خبر یمن میں ایک بلی اور بلے کی شادی اور ان کا باقاعدہ نکاح خواں کے ذریعےنکاح پڑھے جانےکی ہے۔

بلی اور بلی کے نکاح اور شادی کی تقریب کا واقعہ المعلا ڈاریکٹوریٹ میں دیکھا گیا۔ بلی اور بلے کی شادی کی تقریب میں پڑوسیوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

یمن میں سوشل میڈیا پر نشر ہونے والی ایک ویڈیو میں بلی اور بلی کی شادی اوران کے نکاح کی تقریب دیکھی جا سکتی ہے۔ اس ویڈیو کے پوسٹ کیے جانے کےبعد سوشل میڈیا پر سخت رد عمل سامنے آیا ہے۔ نر اور مادہ بلیوں کے درمیان نکاح کا معاہدہ پڑھتے ہوئے دکھایا گیا اور اختتام پر نکاح فارم پر دونوں کے پنجے لگوائے گئے۔

عینی شاہدین کے مطابق تقریب سے قبل شادی کے معاہدے میں شرکت کے لیے باضابطہ دعوت نامہ چھپا گیا۔ دعوت نامہ اسی علاقے کے متعدد قریبی لوگوں میں تقسیم کیے گیا۔اس واقعے نے کچھ لوگوں کی مخالفت کے باوجود بہت سے لوگوں نے اس کی حمایت کی۔

مقامی ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ یہ واقعہ عبوری دارالحکومت عدن کے ضلع المعلا میں پیش آیا۔ سماجی کارکنوں نے اسے عجیب وغریب نکاح قرار دیا۔ نکاح کی تقریب کے لیے ایک مجاز نکاح خواں کو دعوت دی گئی اور نکاح فارم پر بلی اور بلے کے دستخط بھی ثبت کرائے گئے۔

ویڈیو پر سوشل میڈیا پرملا جلا رد عمل سامنے آیا۔ بعض صارفین نے اس نکاح پر تنقید کی جب کہ بعض نے اسے مزاحیہ واقعہ قرار دیا۔ کچھ لوگوں نے بلی اور بلے کی شادی کی تقریب منعقد کرنے پر منتظمین اور نکاح خوان کے خلاف سخت کارروائی کا بھی مطالبہ کیا۔

منتظمین کاکہنا ہےکہ یہ محض ایک تفریح تھی جس میں دو غیرملکی نسل کی بلیوں کا عقد کیا گیا۔ ناقدین نے تقریب منعقد کرنے والوں پر انسانوں اور حیوانوں کا موازنہ کرنے پر انہیں تنقید کا نشانہ بنایا اور نکاح پڑھنے والے مولوی کو گرفتار کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں