روس اور یوکرین

یواے ای کی پولینڈ میں یوکرینی پناہ گزینوں کے لیے27 ٹن خوراک اور طِبّی سامان کی امداد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

متحدہ عرب امارات نے پولینڈ میں یوکرینی پناہ گزینوں کے لیے 27 ٹن خوراک اور طبی سامان بھیجا ہے۔

یوکرین میں متحدہ عرب امارات کے سفیر سالم احمد الکعبی نے انسانی امداد کی کاوشوں میں حصہ ڈالنے کے لیے ملک کے عزم کا اعادہ کیا ہے۔خلیجی ملک نے 24 فروری کو روس کے حملے کے بعد یوکرین سے گھربار چھوڑ کر جانے والے پناہ گزینوں کی مدد کے لیے اب تک پولینڈ اور مالدووا میں امدادی سامان سے لدے چھے طیارے بھیجے ہیں۔ان کے ذریعے مجموعی طور پر 156 ٹن خوراک، ادویہ ،طبی سامان اور ایمبولینسیں بھیجی گئی ہیں۔

متحدہ عرب امارات نے اقوام متحدہ کی انسانی ہمدردی کی اپیل کے جواب میں یوکرینی پناہ گزینوں کے لیے ایک کروڑ83 لاکھ اماراتی درہم (50 لاکھ امریکی ڈالر) عطیہ کرنے کا اعلان کیا تھا۔یہ نیا امدادی سامان اسی رقم کے حصے کے طور پر بھیجا گیا ہے۔

یواے ای کی سرکاری خبررساں ایجنسی وام کی رپورٹ کے مطابق دبئی انٹرنیشنل ہیومینٹیرین سٹی (آئی ایچ سی) نے شہر کی دیگر بین الاقوامی تنظیموں کے ساتھ مل کر 124 ٹن امدادی سامان اور پناہ کے آلات بھی یوکرینیوں کے لیے بھیجے ہیں۔

اقوام متحدہ کے مطابق 24 فروری کو روس کے حملے کے بعد سے 55 لاکھ سے زیادہ یوکرینی شہری اپنا گھربار چھوڑ کر ہمسایہ ملک پولینڈ، مالدووا، رومانیہ اور اس سے آگے فرار ہوچکے ہیں۔عالمی ادارے نے اسے دوسری جنگ عظیم کے بعد یورپ میں پناہ گزینوں کا تیزی سے بڑھتا ہوا بڑا بحران قرار دیا ہے۔

یوکرین کے مشرق میں جنگ کے سبب بحران کا شکار کیف کو جمعہ کے روز اس وقت بڑی تقویت ملی ہے جب یورپی یونین نے سفارش کی کہ وہ اس بلاک میں شامل ہونے کا امیدوار بن جائے۔ یہ فیصلہ روس کے یوکرین کے حملے کے تناظر میں ایک ڈرامائی جغرافیائی سیاسی تبدیلی کی علامت ہے۔

توقع ہے کہ اگلے ہفتے یورپی یونین کے قائدین اپنے سربراہ اجلاس میں یوکرین اور ہمسایہ ملک مالدووا کے لیے بلاک کے ایگزیکٹو کی سفارشات کی توثیق کریں گے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں