پاسداران انقلاب کے انٹیلی جنس چیف کے قتل کی کوشش

حسین طائب ترکی میں اسرائیلیوں کے قتل کا منصوبہ ساز بتائے جاتے ہیں: اسرائیلی میڈیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایرانی حکومت کے مقرب میڈیا ہاؤسز کا کہنا ہے کہ سپاہ پاسداران انقلاب کے محکمہ سراغرسانی کے سربراہ حسین طائب کو ان کے عہدے سے ہٹا دیا گیا ہے اور دوسری جانب ایسی غیر مصدقہ اطلاعات بھی موصول ہو رہی ہیں جن میں حسین طائب پر ناکام قاتلانہ حملے کے بعد زخمی حالت میں ہسپتال لے جانے کا بھی دعوی سامنے آیا ہے۔

یاد رہے کہ چند دن پہلے اسرائیلی میڈیا میں شائع ہونے والی اطلاعات میں طائب کو ترکی میں اسرائیلیوں کو نشانہ بنانے کی کارروائی کا منصوبہ ساز بتایا جا رہا تھا۔

اسرائیل کے سکیورٹی حلقوں نے پیر کے بتایا کہ تل ابیب میں خفیہ ادروں کو ایسی معلومات ملی ہیں جن میں بتایا گیا ہے حسین طائب نامی اعلیٰ ایرانی عہدیدار کو ترکی کی سرزمین پر اسرائیلیوں کو نشانہ بنانے کی ذمہ داری سونپی گئی ہے۔ اس اطلاع پر سپاہ پاسداران انقلاب کے انٹیلی جنس چیف کی نگرانی شروع کر دی گئی۔

رپورٹ کے مطابق حسین طائب کی ایک مشتدد، ظالم اور انتہائی خطرناک کمانڈر کی طویل شہرت موجود ہے، جس کی بنا پر اسرائیلی خفیہ ادارے اس کا پیچھا کرتے رہے ہیں۔ الشرق الاوسط کے مطابق آخر کار تنگ آ کر اسرائیل نے ان سے متعلق اپنی کارروائیوں یا معلومات کو مشتہر کیا ہے تاکہ انہیں اپنے متوقع انجام سے ڈرایا جا سکے۔

یہ ساری کارروائی ایک ایسے وقت میں سامنے آئی جب اسرائیلی وزیر دفاع بینی گینز کے گذشتہ سنیچر کے روز ایک بیان دیتے ہوئے کہا کہ ان کا ملک ان لوگوں پر کاری ضرب لگانے کے لئے تیار ہے کہ جو اسرائیلی شہریوں کو دوسرے ملکوں میں گزند پہنچانے کی منصوبہ بندی کر رہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں