برطانیہ میں زندہ چوہا کھانے کے الزام میں خاتون گرفتار

خاتون نے چوہا نگلنے کا کراہت آمیر منظر’فیس بک‘ لائیو کے ذریعے نشر کیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

جانوروں پر تشدد کے ایک ظالمانہ واقعے میں برطانوی پولیس نے ایک خاتون کو گرفتار کیا ہے جس پر ایک زندہ چوہا کھانے کا الزام ہے۔ خاتون نے نہ صرف چوہا کھایا بلکہ اس منظر کو سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ’فیس بک‘ کی لائیو سروس کے توسط سے دوسروں کو بھی دکھایا۔ چوہا کھانے کے بعد اس نے پانی پیا اور منشیات بھی لی۔

اس واقعے نے سوشل میڈیا پرغم وغصے کی لہر دوڑا دی۔ لنکن شائر کاؤنٹی کی پولیس نے برٹش رائل سوسائٹی فار دی پروٹیکشن آف اینیملز کے تعاون سے خاتون کی گرفتاری کا اعلان کیا۔

پولیس کے مطابق تحقیقات سے معلوم ہوا کہ خاتون نے ایک چیلنج کے طور پر یہ حرکت کی تھی جس کے بعد اس نے کوکین کی ایک مقدارحاصل کی۔

اس کے بعد یہ بھی بتایا گیا کہ ملزمہ کی عمر 39 سال ہے اوراسے جانوروں کے خلاف ظالمانہ حرکت کرنے کے شبہ میں گرفتار کیا گیا تھا۔

حکام نے شہریوں سے مطالبہ کیا کہ جو بھی ویڈیو آن لائن دیکھ رہا ہے وہ فیس بک کو اس کی اطلاع دیں۔

اسے کلپ کے بارے میں اس وقت تک رابطہ نہ کرنے کا حکم دیا گیا تھا جب تک کہ اس واقعے کے بارے میں براہ راست معلومات نہ ہوں جو تحقیقات میں معاونت کر سکے۔

اس کے علاوہ پولیس نے سوشل نیٹ ورکنگ سائٹس کے صارفین سے اپیل کی کہ وہ اس ویڈیو کو شیئر نہ کریں اور نہ ہی اس پر تبصرہ کریں تاکہ اس کے وسیع پیمانے پر پھیلاؤ کو روکا جا سکے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں