برطانیہ 2023 تک خلیجی ممالک کے شہریوں کے لیے ویزے کی شرط ختم کرے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

برطانیہ 2023ء میں ملک میں آنے کے خواہش مند خلیج تعاون کونسل( جی سی سی) کے رکن ممالک کے شہریوں کے لیے ویزے کی شرط ختم کر دے گا جس سے وہ برطانیہ کی نئی ویزا اسکیم سے فائدہ اٹھانے والے اوّلین ممالک بن جائیں گے۔

برطانوی محکمہ داخلہ کے مطابق متحدہ عرب امارات، سعودی عرب،عمان، کویت، قطراور بحرین 2023 میں برطانیہ کے نئی الیکٹرانک سفری اجازت نامے (ای ٹی اے) کی اسکیم سے استفادہ کرسکیں گے۔

اس سے خلیجی ممالک کے شہری بھی برطانیہ کے ویزا کی سہولت کے معاملے امریکا اور کینیڈا سمیت دیگر اہم شراکت داروں کے برابر ہوجائیں گے۔

برطانیہ کی وزیرداخلہ پریتی پٹیل نے کہا کہ اس اقدام کا کے بعد خلیجی ریاستیں ای ٹی اے اوربرطانیہ کے ویزافری سفر سے فائدہ اٹھانے والے دنیا کے اوّلین ممالک میں شامل ہوں گی۔

انھوں نے کہا کہ ہماری اوّلین ترجیح برطانیہ کی سرحدوں کی سلامتی ہے اورای ٹی اے کا آغاز کرکے ہم اس بات کو یقینی بناسکتے ہیں کہ برطانیہ میں داخلے کے خواہش مند ہرشخص کو سفر سے پہلے ایسا کرنے کی اجازت ہو اور خطرے کا موجب بننےوالوں کوابتدا ہی میں انکارکردیا جائے۔

2023ء میں ای ٹی اے کے آغاز سے قبل خلیجی ممالک کے مسافر الیکٹرانک ویزا چھوٹ کا استعمال جاری رکھ سکتے ہیں اور یہ برطانیہ کے سفرسے قبل آن لائن مکمل کیا جا سکتا ہے۔

ای ٹی اے اسکیم 2025ء کے آخر تک مکمل طور پر ڈیجیٹل سرحد کے قیام کے لیے برطانوی حکومت کے اقدام کا ایک اہم حصہ ہے۔اس کا وسیع پیمانے پر اطلاق برطانیہ آنے والے یا نقل وحمل کرنے والے ان مسافروں پرہوگا جنھیں فی الحال مختصرقیام کے لیے ویزے کی ضرورت نہیں، یا اس مقصد کے لیے برطانیہ کا کوئی اورویزانہیں ہے۔

محکمہ داخلہ نےکہاکہ اس کی درخواست کا عمل بالکل سیدھا سادہ ہے اوریہ اسکیم ایک اضافی حفاظتی اقدام کے طورپرکام کرے گی جس سے حکومت کو برطانیہ میں خطرات کو داخلے سے روکنے میں مدد ملے گی جبکہ افراد کو سفر کرنے کی صلاحیت کے بارے میں بھی بروقت یقین دہانی کرادی جائے گی‘‘۔ایک مرتبہ منظوری کے بعد، ایک ای ٹی اے ایک توسیعی مدت کے دوران میں متعدد اسفار کے لیے کارآمد ہوگی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں