.

سعودی عرب کے بعض شہروں میں مصنوعی بارش برسانے کا کامیاب پروگرام جاری

بارش کی ضرورت کے پیش نظر مملکت کے ٹارگٹڈ شہروں میں کلاؤڈسیڈنگ کا پہلا مرحلہ مکمل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے محکمہ موسمیات کے قومی مرکز نے ساحلی علاقوں کے علاوہ طائف، الباحہ، عسیر اور جازان سمیت جنوب مغربی پہاڑی علاقوں میں مصنوعی بارش برسانے کے پروگرام کے دوسرے مرحلے کے لیے آپریشنل آپریشنز اور پروازیں شروع کر دی ہیں۔ اس سے قبل ریاض، قصیم اور حائل کے علاقوں میں کلاؤڈ سیڈنگ پروگرام کا پہلا مرحلہ مکمل کرلیا گیا ہے۔

نیشنل سینٹر آف میٹرولوجی کے سی ای او اور کلاؤڈ سیڈنگ پروگرام کے جنرل سپروائزر ڈاکٹر ایمن بن سالم غلام نے جدہ میں ٹارگٹڈ علاقوں پر کلاؤڈ سیڈنگ آپریشنز کی پیش رفت کے بارے میں اپنے فالو اپ کے دوران وضاحت کی کہ دوسرے مرحلے کی کلاؤڈ سیڈنگ اپنے منصوبے کے مطابق آگے بڑھ رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ زمینی اور فضائی آپریشن کے ماہرین ابتدائی تخمینوں کے مطابق یہ پرگرام کامیابی حاصل کرتے ہوئے آگے بڑھ رہا ہے۔

اس حوالے سے پروازوں کے ٹائم ٹیبل اور بادلوں کو تیار کرنے کے پروگرام پر عمل جاری ہے۔ ماہرین کی تکنیکی ٹیم موسمی اور ماحول دوست پروگرام کو آگے بڑھانے کے لیے اعداد و شمار کا مسلسل تجزیہ کر رہے ہیں تاکہ مناسب موسمی حالات والے علاقوں کی نشاندہی کر کے وہاں پر مصنوعی بارش کا سلسلہ شروع کیا جا سکے۔ ان کا کہنا تھا کہ اس پروگرام کا مقصد مملکت کے تمام خطوں میں بارش کو مقدار بڑھانا ہے۔

جنوب مغربی پہاڑی علاقوں پر بارش

انہوں نے مزید کہا کہ تمام حکومتی اور متعلقہ شعبوں کے ساتھ ہم آہنگی کے تحت یہ کام جاری ہے۔ کلاؤڈ سیڈنگ پروگرام کے نتائج سے زیادہ سے زیادہ فائدہ اٹھانے کی کوشش کے ساتھ اس میدان میں زیادہ سے زیادہ سرمایہ کاری، اس کے امید افزانتائج اور اسے ماحول دوست بنانے کے لیے کام کیا جا رہا ہے۔

محکمہ موسمیات کے عہدیدار کا کہنا تھا کہ کلاؤڈ سیڈنگ پروگرام پروگرام گرین مڈل ایسٹ سمٹ کے نتائج میں سے ایک ہے، جس کا اعلان سعودی ولی عہد نے کیا تھا۔ یہ ایک ایسا اقدام ہے جس پر مرکز قومی اقدامات کے ساتھ مربوط ہے جس کا مقصد پائیدار ترقی کو فروغ دینا، تحفظ فراہم کرنا، ماحولیات اور وسائل کی ترقی کے طریقوں کی تلاش کرنا ہے۔

بارش کی مقدار اور معیار میں اضافہ

کلاؤڈ سیڈنگ ٹیکنالوجی کچھ قسم کے بادلوں کے لیے بارش کی مقدار اور معیار کو بڑھانے کا اہم ذریعہ ہے۔ اس کی خصوصیات سے فائدہ اٹھانے اور پہلے سے طے شدہ علاقوں پر بارش کے عمل کو تیز کرنے کے لیے یہ ہوائی جہاز کے ذریعے کیا جاتا ہے جو بادلوں کی مخصوص جگہوں پر ماحول کے لیے نقصان دہ نہ ہونے والے باریک مواد کے ساتھ منتقل کرنے میں مدد دیتا ہے۔

اس پروگرام کا مقصد پانی کے نئے ذرائع تلاش کرنے کے لیے بارش کی سطح کو بڑھانا، پودوں کا رقبہ بڑھانا اور شجر کاری کا عمل تیز کرنا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں