.

کار ڈرائیونگ کے بعد اب سعودی خواتین کے لیے ٹرین چلانے کی راہ ہموار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

31 سعودی خواتین نے گذشتہ جنوری سے شروع ہونے والی نظریاتی تربیت کے پہلے مرحلے سے گذرنے کے بعد سعودی عرب میں تیز رفتار ٹرینیں چلانے کی تربیت مکمل کر لی ہے۔

تربیت حاصل کرنے والی خواتین دوسرے مرحلے میں داخل ہو گئی ہیں جو کہ تقریباً 5 ماہ تک جاری رہے گا اور تربیت یافتہ افراد عملی تربیت کے لیے ٹرین چلانے میں پیشہ ور ڈرائیوروں کی موجودگی میں کاک پٹ میں بیٹھ سکیں گے۔

توقع ہے کہ اگلے دسمبر کے آخر تک تربیت یافتہ خواتین تمام ٹیسٹ اور ٹریننگ پاس کرنے کے بعد خود سعودی شہروں کے درمیان ٹرینیں چلانا شروع کر دیں گی۔

سعودی خواتین نے ٹریفک کے ضوابط، حفاظت، کام کے خطرات، آگ بجھانے اور ٹرین اور انفراسٹرکچر سے متعلق تکنیکی پہلوؤں سمیت کئی نظریاتی تربیتیں پاس کیں۔

آنے والے مراحل میں سعودی مرد اور خواتین ڈرائیوروں کی تعداد میں اضافہ کیا جائے گا۔ توقع ہے کہ اگلے چند سالوں کے دوران ٹرین کے ذریعے سفر کی مانگ میں نمایاں اضافہ ہوگا۔ حج اور عمرہ سیزن میں ٹرینوں کے مسافروں کی تعداد بڑھنے کا قوی امکان ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں