مصنف سلمان رشدی پر حملہ خوفناک تھا: وائٹ ہاؤس کے مشیر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

وائٹ ہاؤس کے قومی سلامتی کے مشیر جیک سلیوان نے کہا کہ ناول نگار اور ادیب سلمان رشدی پر جمعہ کے روز نیویارک میں ایک لیکچر کے دوران اسٹیج پر کیا جانا والا حملہ خوفناک تھا۔

حملہ آور تیز دھار چاقو سے ان کی گردن پر وار کیے جس وہ شدید زخمی حالت میں زمین پر گر پڑے۔

اپنے ایک ٹوئٹر پیغام میں انہوں نے سلمان رشدی کی جلد صحت یابی کے لیے دعا کرتے ہوئے ان شہریوں کی تعریف کی اور شکریہ ادا کیا جو حملہ کے فوری بعد ان کی جان بچانے مدد کو آگے بڑھے۔

کئی گھنٹوں کی سرجری کے بعد، رشدی کو مصنوعی تنفس کے لیے وینٹی لیٹر سے سپورٹ فراہم کی جا رہی ہے۔ جمعے کی شام ایک حملے کے بعد وہ بات نہیں کر پا رہے۔ دنیا بھر کے مصنفین اور سیاست دانوں نے اس کارروائی کو اظہار رائے کی آزادی پر حملہ قرار دیا تھا۔

ان کی کتابیں کی اشاعت میں معاونت فراہم کرنے والے ان کے ایک ایجنٹ اینڈریو وائلی کا بھی کہنا تھا کہ ’’خبر اچھی نہیں ہے،" سلمان کی ایک آنکھ ضائع ہونے کا امکان ہے۔ ان کے بازو کی رگیں کٹ چکی ہیں جبکہ ان کے جگر کو بھی چاقو حملے سے نقصان پہنچا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں